زینب قتل کیس: نوجوان نے اپنی پہچان اور لاہور آنے کا مقصد ویڈیو پیغام میں بتا دیا

Zainab murder case: man told his identity and purpose of coming to Lahore
Zainab murder case: man told his identity and purpose of coming to Lahore

:راولپنڈی

سوشل میڈیا پر زینب کے والد کے عقب میں کھڑے ایک نوجوان کی ویڈیو وائرل ہو رہی تھی جس پر سوشل میڈیا صارفین کا ماننا تھا کہ اس شخص اور سی سی ٹی وی فوٹیج میں موجود شخص کی شکل مشابہہ ہے۔یہ تصویر اتنی وائرل ہوئی کہ نوجوان کو اپنی صفائی دینے کے لیے خود ویڈیو پیغام جاری کرنا پڑا۔ اس ویڈیو پیغام میں نوجوان نے بتایا کہ میرا نام وسیم خٹک ہے۔

میں گذشتہ دس سال سے پاکستان عوامی تحریک یوتھ ونگ کا ممبر ہوں اور ڈاکٹر طاہر القادری کا پیروکار ہوں۔ وسیم نے بتایا کہ میرے پاس گذشتہ چار سال سے پاکستان عوامی تحریک کے ضلعی صدر کی ذمہ داری رہی ہے اور اب میرے پاس نائب صدر ضلع راولپنڈی کی ذمہ داری ہے۔ میں زینب کے والدین کو لینے کے لیے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ روانہ ہوا۔ ہمیں مرکز سے احکامات موصول ہوئے تھے کہ ہمیں ان کو واپس لاہور کے لیے بٹھانا تھا۔

ان کی آمد پر ہم ان سے مل کر ان کو میڈیا ٹاک کے لیے باہر لائے تو اس وقت میری ایک تصویر لی گئی جو سوشل میڈیا پر یہ کہہ کر وائرل کی گئی کہ زینب کے قتل کا ملزم میں ہوں۔ وسیم نے کہا کہ میرا اس واقعہ کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔ہم ظلم کے خلاف بولنے والے اور عملی طور پر کام کرنے والے قائد کے جانباز ہیں۔ مجھے افسوس ہے ان لوگوں پر جنہوں نے میری تصویر وائرل کی۔ وسیم خٹک نے مزید کیا کہا آپ بھی ملاحظہ کیجئیے

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here