امریکی ماہرین نے انسانی خلیے جتنا روبوٹ بنالیا

US experts made robots like human cells
US experts made robots like human cells

:نیویارک

کورنیل یونیورسٹی کے ماہرین نے انسانی خلیے (سیل) کے برابر ایک روبوٹ بنایا ہے جس سے بجلی گزر سکتی ہے، یہ اپنے ماحول کو محسوس کرتا ہے اور یہاں تک کہ اس کےلیے ایک پٹھا یا مسل بھی بنالیا گیا ہے۔

پال مک ایوین اور اٹائی کوہن دو ماہرینِ طبیعیات ہیں جنہوں نے ایسا روبوٹ بنایا ہے جو بہت ہی چھوٹا ہے۔ یہ کیمیائی اور حرارتی تبدیلیاں نوٹ کرسکتا ہے اور اس پر برقی (الیکٹرونک) یا کیمیائی (کیمیکل) اجزا بھی رکھے جاسکتے ہیں۔ اس طرح بہت ہی باریک جانداروں جیسے روبوٹ تیار کرنا ممکن ہوگیا ہے۔

اس موقع پر اٹائی کوہن نے کہا، ’آپ وائیجر اول (مشہور خلائی جہاز) کی پوری کمپیوٹر طاقت ایک انسانی خلیے جتنی جگہ پر سمو سکتے ہیں اور اس سے بہت سے کام لے سکتے ہیں۔‘

پال مک ایوین نے بتایا کہ ہم نے جو شے بنائی ہے، اسے بہت چھوٹے برقی آلات کا بیرونی ڈھانچہ (ایکسو اسکیلیٹن) کہا جاسکتا ہے۔ اس پورے نظام کو ’گریفین بیسڈ بایومارفس فور مائیکرون سائزڈ آٹونومس اوریگامی مشین‘ کا نام دیا گیا ہے جس کی تفصیلات تحقیقی مجلے ’پروسیڈنگز آف دی نیشنل اکیڈمی آف سائنسز‘ (PNAS) میں آن لائن شائع ہوئی ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here