ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیان پرآج وفاقی کابینہ کا اجلاس

federal cabinet
federal cabinet

:اسلام آباد

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیان کے بعد آج  وفاقی کابینہ نے اجلاس بلا لیا

ذرائع نے بتایا کہ وفاقی کابینہ کا اجلاس آج شام طلب کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق کابینہ کا اجلاس وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت ہوگا جس میں ملکی اقتصادی معاشی صورتحال سمیت سیکیورٹی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ اجلاس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے پاکستان پر الزامات سے متعلق بیان کا معاملہ بھی زیر غور آنے کا امکان ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ 14 نکاتی ایجنڈے پر غور کرے گی، پرتگال، مصر اور بوسنیا کی حکومتوں کے ساتھ تعاون بڑھانے کی یاداشتوں کی منظوری ایجنڈے میں شامل ہے۔

قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب

دوسری جانب وزیراعظم نے قومی سلامتی کمیٹی کا اہم اجلاس طلب کرلیا جس میں چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف کمیٹی، ڈی جی آئی ایس آئی، ڈی جی ایم او اور مسلح افواج کے سربراہان شریک ہوں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں کمیٹی کے رکن وفاقی وزراء بھی شرکت کریں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں امریکی صدر کے بیان اور ملکی و علاقائی سیکیورٹی صورتحال پر بھی غور ہوگا۔

اجلاس میں ملکی سفارتی و سیکیورٹی پالیسی پر تفصیلی غور کیا جائے گا جب کہ وزارت خارجہ اور وزارت دفاع کی طرف سے بریفنگ دی جائے گی۔

ٹرمپ کی پاکستان پر تنقی

ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹوئٹر پر ایک بار پھر پاکستان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ امریکا نے گزشتہ 15 سالوں کے دوران اسلام آباد کو 33 ارب ڈالر امداد دے کر بے وقوفی کی۔

انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ امریکا نے گزشتہ 15 برس میں احمقوں کی طرح پاکستان کو 33 ارب ڈالر امداد کی مد میں دیے اور انہوں نے ہمیں جھوٹ اور دھوکے کے سوا کچھ نہیں دیا۔

امریکی صدر نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ پاکستان نے ہمارے حکمرانوں کو بے وقوف سمجھا، جن دہشت گردوں کو ہم افغانستان میں ڈھونڈتے رہے پاکستان نے انہیں محفوظ پناہ گاہیں دیں اور ہماری بہت کم معاونت کی، لیکن اب مزید نہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ چند ماہ کے دوران امریکا کی جانب سے پاکستان پر متعدد بار دہشت گردوں کو پناہ دینے کا الزام عائد کیا جا چکا ہے جس کے جواب میں پاکستان کی سیاسی اور عسکری قیادت نے واضح پیغام دیا تھا کہ ہم نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دیں اور امریکا اپنی ناکامیوں کا ملبہ پاکستان پر گرانے کے لیے بے بنیاد الزامات عائد کر رہا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اس سے قبل بھی پاکستان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے پاکستان کی امداد بند کرنے کی دھمکیاں دے چکے ہیں۔

گزشتہ برس دسمبر میں امریکی وزیر دفاع جیمس میٹس نے پاکستان کا دورہ کیا تھا جس میں انہوں نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی قربانیوں کا اعتراف بھی کیا تھا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here