چین میں دنیا کا سب سے طویل سمندری پل تیار

The world's longest marine bridge in China
The world's longest marine bridge in China

:بیجنگ

چین نے دنیا کے طویل ترین سمندری پل کی صورت میں دنیا کا ایک اور عجوبہ تعمیر کرلیا جسے دیکھ کر عقل دنگ رہ جاتی ہے۔

سات برس کی مدت میں مکمل ہونے والے اس پل میں استعمال ہونے والے فولاد  60 ایفل ٹاورز کے برابر فولاد استعمال ہوا ہے اور یہ چین کو مکاؤ اور ہانگ کانگ سے ملائے گا، اندازہ ہے کہ اس کی تعمیر میں 4 لاکھ 20 ہزار ٹن فولاد استعمال کیا گیا ہے۔

The world's longest marine bridge in China

صرف یہی نہیں اس پل میں ٹریفک کے لیے 6 لین قائم کی گئی ہیں جو چار سرنگوں سے بھی گزرتی ہیں اور اسے سنبھالنے کے لیے چار مصنوعی جزائر بھی قائم کیے گیے ہیں۔ عظیم الشان پل پر اخراجات کا درست تخمینہ سامنے نہیں آسکا تاہم اب تک چین اس پر اربوں ڈالر کی رقم خرچ کرچکا ہے۔

The world's longest marine bridge in China

پل بنانے والی ٹیم کے سربراہ گاؤ ژنگلن کہتے ہیں کہ امریکا، برطانیہ ، ڈنمارک، سوئزر لینڈ اور جاپان سمیت دنیا کے 14 ممالک کے ماہرین نے مل کر اسے ڈیزائن کیا ہے۔ اس منصوبے کے اختتام پر ہونے والے جانی نقصان پر اسے تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا تھا لیکن اب اس کی تکمیل کے بعد ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو اس پل کا دورہ کرایا گیا ہے تاہم اب تک اس کی حتمی افتتاحی تاریخ نہیں بتائی گئی۔

اس طویل پل پر روزانہ 40 ہزار گاڑیاں گزریں گی جبکہ ہر 10 منٹ بعد شٹل بسیں بھی چلائی جائیں گی۔ چین اس دیوہیکل پل کے ذریعے اگلے 10 برس میں مزید 25 کروڑ افراد کو بڑے شہروں میں بسانا چاہتا ہے اور اس کے لیے شہری انتظامات اور انفرااسٹرکچر پر کھربوں روپے خرچ کیے جارہے ہیں۔

The world's longest marine bridge in China

ماہرین کے مطابق اس پل کی تعمیر کے بعد چین کی مرکزی سرزمین سے ہانگ کانگ کا سفر اور وقت نصف ہوجائے گا۔ چینی ماہرین کے مطابق اس پل کی مرمت کا خاص خیال رکھا جائے گا تاہم اس پل کی عمر120 سال بتائی جارہی ہے۔ 

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here