سپریم کورٹ نے نوازشریف کیخلاف توہین عدالت کی درخواست مسترد کردی

The Supreme Court rejected the application of contempt court against Nawaz Sharif
Deposed Pakistani Prime Minister Nawaz Sharif waves to his supporters during a rally in Muridke, Pakistan, Saturday, Aug. 12, 2017. Sharif is currently holding on-the-road rallies across Punjab, in a move aimed at demonstrating his political strength amid tight security. Sharif criticized the country's judiciary for disqualifying him from office for concealing assets. (AP Photo/Anjum Naveed)

:اسلام آباد

سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست مسترد کردی۔

چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے نوازشریف، خواجہ سعد رفیق اور دانیال عزیز کے خلاف توہین عدالت کی درخواستوں کی سماعت کی اور تمام درخواستیں مسترد کردیں۔

چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ قانون کے مطابق فیصلوں پر تبصرہ ہرآدمی کا حق ہے، ہم نہیں سمجھتے جو مواد ہمارے سامنے پیش کیا گیا وہ توہین عدالت سے متعلق ہے۔

درخواست گزار شیخ احسن الدین نے کہا کہ میڈیا رپورٹ کے مطابق نوازشریف نے کہا عدالت کا فیصلہ 20کروڑ عوام کی توہین ہے، اس پر جسٹس اعجازالاحسن نے استفسار کیا کہ کیا پارٹی نے 20کروڑ ووٹ لیے تھے؟ عدالتی تحمل بھی کوئی چیز ہوتی ہے۔

شیخ احسن نے کہا کہ عدالتی تحمل کی بھی ایک خاص حد ہوتی ہے، اس پر چیف جسٹس نے مکالمہ کیا کہ شاید اس معاملے میں حد کراس نہیں ہوئی، شاید کسی اور موقع پراس سے زیادہ ہوئی ہو۔

جسس اعجاز الاحسن نے شیخ احسن الدین سے مکالمہ کیا کہ آپ کی حد سے ہماری حد زیادہ ہے۔

درخواست گزار کے وکیل کا کہنا تھا کہ خواجہ سعد رفیق نے کہا یہ احتساب نہیں انتقام ہے، سعد رفیق نے کہا صادق اور امین کا تماشا لگا تو معاملہ بہت دورتک جائیگا۔

درخواست گزار کے وکیل کے دلائل پر چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ ایسے بیانات کو ہم درگزر کررہے ہیں،کئی چیزیں اس سے بڑی ہوئی ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here