اسد عمر کی وزارت خزانہ سے علیحدگی پر اپوزیشن کا شدید طنز اور تنقید

The opposition and criticism on separation from the Finance Ministry of Asad Umar  
The opposition and criticism on separation from the Finance Ministry of Asad Umar  

:اسلام آباد

وزیر خزانہ اسد عمر کی جانب سے وزارت چھوڑنے سے متعلق بیان کے بعد اپوزیشن کی جانب سے ردعمل کا سلسلہ جاری ہے۔

بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان مصطفیٰ نواز کھوکھر کا کہنا ہے کہ قوم کو مبارک ہو، پیپلز پارٹی کے مطالبے پر حکومت کی پہلی وکٹ اڑ گئی، عمران خان حکومت کی مزید وکٹیں بھی جلد گر جائیں گی اور حکومت کی پوری ٹیم 50 اوورز سے بہت پہلے پویلین لوٹ جائےگی۔

ترجمان بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ عمران خان نے ملک کو بدترین بحران میں دھکیل دیا ہے، معاشی بحران کے بعد ملک میں گورننس کا بدترین بحران پیدا ہوگیا ہے، سلیکٹڈ وزیراعظم سے نہ معیشت چل رہی ہے اور نہ خارجہ امور چلا پارہے ہیں۔

شہبازشریف کا رد عمل

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے اسد عمر کے استعفے پر رد عمل میں کہا کہ پہلے دن کہا تھا کہ پاکستان کی معیشت انا، ضد اور تکبر کی زد میں ہے، عمران نیازی ضد، انا اور تکبر کو چھوڑ کر معیشت کو ترجیح دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پہلے دن میثاق معیشت کی پرخلوص پیشکش کی تھی، وقت ضائع نہ کیا جاتا تو ملک کو موجودہ معاشی تباہی کا سامنا نہ کرنا پڑتا، مزید وقت ضائع ہوا تو معاشی اقتصادی لحاظ سے سنگین نتائج جھیلنا پڑیں گے۔

اسد عمر کا استعفیٰ بزدلی کی عکاسی کرتا ہے: اسحاق ڈار

سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے اسد عمر کے استعفے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ 2014 سے لےکر آج تک اسد عمر نے قوم سے غلط بیانی کی، اسد عمر 8 ماہ وزیر خزانہ رہے اور انہوں نے قوم کے سامنے مسخ شدہ حقائق رکھے۔

اسحاق ڈار نے کہا کہ بجٹ میں ایک ماہ رہ گیا ہے اور آئی ایم ایف سے معاہدہ بھی آخری مراحل میں ہے، ایسے میں اسد عمر کے لیے مناسب نہیں کہ وہ اسطرح میدان کو چھوڑ کر چلےجائیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسد عمر کا استعفیٰ بزدلی کی عکاسی کرتا ہے۔

رہنما ن لیگ نے کہا کہ ہم نے پچھلے 3 ہفتے سے عمران خان نیازی کی حکومت کے جھوٹ کی نشاندہی کی، ہم نے عوام پر مہنگائی کے بم گرائے جانے کی بھی نشاندہی کی۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے حکومت کو مشورے بھی دیئے کہ کس طرح معیشت کو ٹھیک کیا جا سکتا ہے لیکن انہوں نےکوئی بات نہ سنی اور آج اسد عمر استعفیٰ دے رہے ہیں جو مناسب نہیں ہے۔

 عمران خان کی معاشی پالیسیاں ناکام ہیں: مریم اورنگزیب

ترجمان مسلم لیگ (ن) مریم اورنگزیب نے اپنے ردعمل میں کہا کہ اگر حکومت کی پالیسیاں بہت اچھی تھیں تو پھر  اسد عمر کو وزرات خزانہ چھوڑنے کا کیوں کہا گیا۔

مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ اسد عمر کا جانا اس بات کا ثبوت ہے کہ عمران خان کی معاشی پالیسیاں ناکام ہیں، اصل مسئلہ اسد عمر نہیں بلکہ وزیراعظم عمران خان خود ہیں۔

مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر آصف کرمانی نے اپنے بیان میں کہا کہ بڑی دیر کی مہربان آتے آتے، پی ٹی آئی کی پہلی وکٹ گر گئی، اسد عمر نے معیشت کا بیڑا غرق کردیا، یہ لوگ ملک چلانے کی اہلیت اور قابلیت نہیں رکھتے۔

سینیٹر آصف کرمانی کا مزید کہنا تھا کہ اسد عمر نے غریب عوام کے لیے روٹی کمانا مشکل بنا دیا، ان کی نا تجربہ کاری سے مہنگائی ہوئی، ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here