مقبوضہ بیت المقدس میں امریکی سفارتخانےکا افتتاح، احتجاج میں 55 فلسطینی شہید

The inauguration of the US Embassy in the occupied Jerusalem, 55 Palestinian martyrs in protest
The inauguration of the US Embassy in the occupied Jerusalem, 55 Palestinian martyrs in protest

:تل ابیب

مقبوضہ بیت المقدس میں امریکی سفارتخانےکا افتتاح کردیا گیا، تقریب سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خطاب کیا۔

خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق امریکی صدر نے تقریب سے بذریعہ وڈیو لنک خطاب کیا۔ امریکی نائب وزیر خارجہ جان سولیون کی قیادت میں وفد نے شرکت کی جس میں ٹرمپ کی بیٹی ایونکا، ان کا شوہر جیرڈ کشنر اور دیگر شامل تھے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ امریکا مشرق وسطیٰ میں امن کے عزم پر قائم ہے۔

ترک صدر طیب اردگان نے شہادتوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس کامشرقی حصہ فلسطینیوں کا دارالحکومت ہے، سفارتخانے کی منتقلی کے بعد امریکا امن مذاکرات میں ثالث کی حیثیت کھوچکا ہے۔

دوسری جانب امریکی سفارتخانے کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کےخلاف فلسطینیوں کاشدید احتجاج جاری ہے۔

رپورٹس کے مطابق غزہ پٹی میں مظاہرین پر اسرائیلی فائرنگ کے نتیجے میں 55 فلسطینی شہید جبکہ 2400 سے زائد زخمی ہوگئے۔

جون سے اب تک اسرائیلی فائرنگ سے 90 فلسطینی شہید ہوچکے ہیں جبکہ 11200 زخمی ہوگئے۔

عرب میڈیا کے مطابق غزہ کی پٹی پر فلسطینیوں نے مقبوضہ بیت المقدس میں امریکی سفارتخانے کی منتقلی کے فیصلے کے خلاف احتجاج کیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں افراد نے شرکت کی۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق ’گریٹ مارچ آف ریٹرن‘ میں شرکت کےلیے فلسطینیوں کی بڑی تعداد غزہ میں موجود تھی جس نے اسرائیل کے قیام کی 70 سال مکمل ہونے پر احتجاج کیا۔

اسرائیلی فوج نے احتجاج کرنے والے نہتے فلسطینیوں پر فائرنگ کردی جس سے 16 بچوں سمیت 55 افراد شہید اور ایک ہزار سے زائد زخمی ہوگئے۔

فلسطینی صدر نے غزہ میں ہونے والی شہادتوں پر 3 روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے جبکہ پورے فلسطینی علاقوں میں ہڑتال کی اپیل بھی کی گئی ہے۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here