صحرانامہ” عبدالشکورابی حسن کے قلم سے”

Sehara nama, From the pen of Abdul Shukur abi Hassan
Sehara nama, From the pen of Abdul Shukur abi Hassan

صحرانامہ

پاکستان انٹرنیشنل ائیر لائنز کے باکمال سروس کا اوورسیز پاکستانیوں کے لئے لاجواب فیصلہ

پاکستان کے وزیراعظم شاہد حاقان عباسی ایک نجی ائیر لائنز کے مالک ہیں جو کویت کے علاوہ مختلف بین الاقوا ی روٹ پر آڑان کررہی ہیں لیکن کویت میں پی آئی اے جو تقریبا 50 سال سے کویت کا روٹ استعمال کررہی ہے ماسوائے دھند کے پرواز کبھی معطل نہیں ہوئی اب اس کو بند کرنا کئی سوالات کو جنم دے رہاہے کہ وزیراعظم پاکستان اپنی ائیر لائنز کو کویت لانے کی وجہ سے پی آئی اے کو بند کرانے کا فیصلہ ہوا ہے جو بیرون ممالک پاکستانیوں کے خلاف سراسر زیادتی کے مترادف ہے ایک روٹ جو منافع بخش ہے اس کو بند کرنا نااہلی ہی نہیں بلکہ انتہائی احمقانہ فیصلہ ہے ۔

پاکستان انٹرنیشنل ائیر لائنز کے نااہل انتظامیہ نے ایک بار پھرخلیجی ممالک میں بسنے والے لاکھوں اوورسیز پاکستانیوں کے حقوق  کو قدغن لگانے کی کوشش کرنے میں مصروف ہیں۔صرف کویت میں سے پی آئی اے سالانہ 5 ملین دینار (16ملین ڈالر) کماکر ملک میں زرمبادلہ بھیج رہاہے

پاکستان انٹرنیشل ائیر لائنز کی باکمال انتظامیہ نے لاجواب فیصلہ کرتے ہوئے جہاں اربوں کے خسارے میں جانے والی قومی ائیر لایرز کو مزید زبردست مالی خسارے سے دوچار کرنے کا فیصلہ ہی نہیں کیا بلکہ خلیجی ممالک میں بسنے والے لاکھوں پاکستانی جو قومی ائیرلائنزپربسفرکرتے ہیں کو بھی شدید مالی اور ذہنی طورپر نقصان پہنچانے کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے۔باخبر ذرائع کے مطابق پی آئی اے کی اعلی انتظامیہ نے لیز پر لئے گے جہازوں  کی واپسی کی وجہ سے کویت جیسےمنافع بخش روٹ پر اپنا آپریشن یاتووقتئ طورپرمعطل  کررہی یا پروازوں کی تعداد میں کمی کے لئے تجاویزمانگ رہی ہیں .اعلی انتظامیہ کی اس بات سے بخوبی اندازہ  لگایا جاسکتاہے کہ کوئی متبادل انتظامیہ اور قابل عمل حل نکالے بغیرکسئ پلاننگ کے بنا شاٹ کٹ راستہ اختیار کرتے ہوئے اپنا آپریشن دوماہ کے لئے معطل کرنے کی تجاویز پر کام کر رہے ہیں جس میں نہ صرف قومی ادارے کو کروڑوں ڈالر کا نقصان ہوگا بلکہ پاکستانی رل جائیں گے ۔

ذرائع کے مطابق انتظامیہ نے بغیر کسی حکمت عملی کے غیر پیشہ وارانہ اور غیر ذمہ دارانہ فیصلہ کرتے ہوئے  منافع بخش  روٹ کو معطل کرنے کا غیر دانشمندانہ فیصلہ کو قابل عمل بنانے کا عندیہ دے دیاہے .جس سے ہزاروں پاکستانیوں جنہوں نے پی آئی اے  کی ٹکٹیں خریدی ہوئی ہیں شدید تشویش اور پریشانی کا اظہار کرتے ہوئے ارباب اختیار غیر پیشہ وارانہ انتظامیہ کو قومی ادارے کو مالی بحران اور نقصان سے بچانے کے لئے فوری طورپر تبدیل کرنے کا مطالبہ  کیا ہے اور منافع بخش روٹ سے پروازیں معطل کرنے پر عمل درآمد کرنے سے روکا جائے۔یہاں امر قا ذکرہے جو پی آئی اے نے لیز پر جہاز لئے وہ کویت روٹ پر استعمال نہیں ہوتے۔پاکستان مسلم لیگ ن کویت کے نائب صدر ملک طالب حسین صدیقی۔کویت پاکستان فرینڈ شپ ایسوسی ایشن کے صدر رانا اعجاز حسین سہیل۔پاکستان کریسنٹ سوسائٹی کے چیئرمین اظہر نوید بٹ ۔ختم نبوت موومنٹ کویت کے سیکرٹری جنرل مقصود علئ منظور اور راج بہادر نے پی آئی اے کی انتظامیہ کے کویت روٹ معطل کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاہے پی آئی اے اس اقدام پر نظر ثانی کرے۔

پاکستان سے کویت سے پی آئی اے کے روٹ کو یکم فروری سے مکمل طورپر بند کرنے کے خلاف پاکستانی کمیونٹی میں تشویش کی لہر پیدا ہوگی ہے اور ہر کوئی اس اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کررہاہے ۔

 عوامی نیشنل سنٹر کویت  کے صدر جہانزیب خان نے اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ کویت میں پاکستانی کمیونٹی PIAکی پرواز سے مستفید ہوتی ہے لہذا اسے بند نہ کیا جائے۔ عوامی حلقوں میں بھی کویت سے پی آئی اے کی پرواز کی بندش پر ناراضگی کا اظہار کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم پہلے بھی کراچی اور پشاور کی فلائٹ کی بندش پر آواز اٹھاتے رہے ہیں مگر اب ہم پی آئی اے کی بندش پر خاموش نہیں رہےں گے بلکہ بھرپور احتجاج ریکارڈکروائیں گے۔پاکستان بزنس سنٹر کویت ایم ڈی حافظ محمد شبیر نے کہاہے کہ ہمارے علم میں یہ یہ بات آئی ہے کہ PIAکے اعلیٰ حکام نے کویت کیلئے پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کو فوری بند کرنے کے احکامات جاری کردئیے گئے ہیں جو کہ کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کیلئے ایک لمحہ فکریہ ہے ، کویت کیلئے ایک ہفتے میں 5فلائٹس ہوتی ہےں اور اس قومی ایئرلائن PIAسے ہزاروں کی تعدا د میں پاکستانی اپنے وطن عزیز کیلئے سفر کرتے ہیں اورپاکستان کے زرمبادلہ میں اضافہ کا باعث بنتے ہیں لہذا ہم آپ سے گزارش اور مطالبہ کرتے ہیں کہ PIAکی پروازوں کو کویت کیلئے کسی بھی صورت بند نہ کیا جائے اگر ایسا کیا گیا تو یہ کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے ساتھ ناانصافی ہوگی ۔

ٹورازم ٹریول ایجنسی کے رکن اسامہ ظہور نے کہاکہ میں 10 سال سے ٹورازم کے لئے کام کررہاہوں اور پی آئی اے پرواز کی ٹکٹیں فروخت کرتاہوں پاکستانی کمیونٹی کی اکثریت پی آئی اے پر پاکستان کے لئے سفر کرنا کرتے ہیں میری سمجھ سے بالا ہے کہ پی آئی اے حکام کویت روٹ کو کیوں بند کررہی ہے اس کا فوری نوٹس لینا چاہئے اوراس منافع بخش روٹ کو ہر گز بند نہ کریں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کویت سیکرٹری جنرل میاں اشتیاق نے کہاکہ ہم 35 سال سے پی آئی اے پر سفر کر رہے ہیں اب پی آئی اے کے اعلی حکام  نے کویت سے پی آئی اے کی پرواز کو بند کردی کا انتہائی احمقانہ فیصلہ کیاہے جس کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے حکومت کو اس کا سخت نوٹس لینا چاہئے

کویت میں سوا لاکھ سے زیادہ پاکستانی روزگار کے سلسلہ میں مقیم ہیں جن کی فلاح و بہبود کیلئے حکومت پاکستان کا کردار صفر رہا ہے رہی سہی کسر PIAکی بندش سے نکال دی۔۔پاکستان سے کویت کیلئے 7 دنوں میں 5 پروازیں ہوتی ہیں جو کہ اب بند کر دی گئیں ہیں ان خیالات کا اظہار کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی معروف سماجی شخصیت ماہر طب حکیم طارق محمود صدیقی نے کیا انہوں نے کہا حکومت پاکستان  ہوش کے ناخن لے اور اپنا فیصلہ بدلتے ہوئے PIA کی پروازوں کو کویت کیلئے بحال کیا جائے۔۔۔کئی عشروں سے کویت میں مقیم رہنے والے پاکستانی شہری ہمیشہ اپنے دیس کی ایئر لائن پر سفر کرنا سعادت سمجھتے ہیں جو کہ نون لیگ کی حکومت ان سے یہ حق بھی چھیننا چاہتی ہے انہوں نے کہا حکومت قومی ایئر لائن کو بحال کرتے ہوئے کویت میں مقیم ہم وطنوں کے چہروں کا خوشیاں لوٹائے ۔۔

پی آئی اے کے ارباب اختیار کی جانب سے پاکستان سے کویت کا پی آئی اے کا روٹ بند کرنے کے فیصلے کے خلاف کویت میں مقیم خواتین بھی اس فیصلے کے احتجاج میں شامل ہوگئی ہیں ۔کویت معروف پاکستانی ڈاکٹر بینا منصور نے کہاہے کہ جب سے اس خبرلو سنا ہے کہ پی آئی اے کویت سے پاکستان کا روٹ ختم کررہاہے انتہائی افسوس ہوا ہے کویت میں مقیم پاکستانی جو پی آئی اے پر ہی سفر کرنے کو اہمیت دیتے ہیں اس روٹ کو ختم کیا جارپاہے پی آئی اے کے اعلی حکام کے فیصلے پر ماتم کرنے کو جی چاہتاہے ایک منافع بخش روٹ کو بند کرنا سراسر زیادتی ہے اس سے قبل پشاور۔کراچی اعر اسلام آباد کا روٹ ختم کیا جاچکاہے

مسز طوبی نے بھی پی آئی اے کے پاکستان  کویت روٹ کو ختم کرنے کے فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اعلی حکام کو اپنا فیصلہ واپس لینا چاہئے اور کویت سے کراچی پشاور اور اسلام آباد روٹ کو دوبارہ بحال کرناچاپئے ۔

محمد طارق نے کہاکہ انےہائی افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہاہے کہ پی آئی اے کے اعلی حکام خداکا خوف کریں جومنافع بخش روٹ ہے اس کو بند کرکے کس ائیر لائنز کو مالی فائدہ پہنچانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔حکومت پاکستان اور چیئرمین مہتاب عباسی کو اس طرف توجہ دینی چاہئے اور کویت پاکستان کے پی آئی اے کے روٹ کو کسی حال بھی بند نہ کیاجائے

محمد محبوب نے اپنے بیان میں کہاکہ کویت میں پہلے ہی پاکستانی پی آئی اے پر سیٹ نہ ملنے کی وجہ سے دوسری ائیر لائنز پر کھجل ہوتے پھرتے ہیں اب پی آئی اے کو بند کردیا گیاتو پاکستانی رسوا ہوجائیں گے ہم تو پہلےطالبہ کرتے رہے ہیں کہ اسلام آباد۔کراچی اور پشاور کے روٹ بحال کیاجائے الٹا پورے پاکستان سے پروازوں کو ہی بند کیانجارہاہے اعلی حکام کو پاکستانیوں کی مشکلات کومظررکھتے ہوئے فیصلے کرنے چاہئے

رانا فیصل نے کہاہے پی آئی اے کو ان روٹس کو بند کرناچاپئے جہاں سے انہیں خسارہ ہورہاہے ناکہ کماو روٹس کو بند کرکے پاکستانی کمیونٹی کی پریشانیوں میں اضافہ کیاجائے لہذا پی آئی اے کے اعلی حکام کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنی چاہئے

عبدالشکورابی حسن

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here