دن میں 10 مرتبہ سونے والی عجیب لڑکی

Schoolgirl, 14, falls asleep up to 10 times a day and becomes paralysed when she laughs
Schoolgirl, 14, falls asleep up to 10 times a day and becomes paralysed when she laughs

:لندن

 ایک اعصابی عارضے میں مبتلا 14 سالہ لڑکی دن میں 10 مرتبہ نیند کی آغوش میں چلی جاتی ہے یہاں تک کہ وہ خریداری کرتے اور ہاکی کھیلتے وقت بھی اچانک سو جاتی ہے۔

نکول ہرسٹ نامی لڑکی ایک کیفیت ’نارکولیپسی‘ کا شکار ہے  جس میں دماغ نیند کو باقاعدہ اور منظم نہیں رکھ سکتا اور یوں اسے نیند کسی دورے کی طرح آتی ہے۔ اسی طرح ہنستے وقت یا خوف کی صورت میں بھی وہ فرش پر گرکر تھوڑی دیر کے لیے فالج زدہ ہوجاتی ہے۔

 paralysed

یارک شائر کے علاقے ویک فیلڈ سے تعلق رکھنے والی نکول اگرچہ اس عجیب مرض کی شکار ہے لیکن اسکول میں اس کی حاضری 100 فیصد ہے اور سیٹس میں بھی اس کی کارکردگی بہت نمایاں ہے۔  نکول اسکول کے علاوہ بازار میں بھی کسی بھی وقت خوابیدگی میں چلی جاتی ہے۔

علاج سے قبل وہ دن میں 23 گھنٹے تک سوتی تھی لیکن اب دوا کھانے کے بعد وہ روزانہ 3 سے 4 گھنٹے سوتی ہے لیکن نیند کے وقفوں کی تعداد بہت زیادہ ہے۔

 paralysed

نکول میں چھ برس کی عمر میں نارکولیپسی کا انکشاف ہوا تھا اور اس سے قبل اس نے حلق میں دیرینہ خراش محسوس کی۔ اس کے غسل کی نگرانی اس کی والدہ کرتی ہیں کیونکہ نہاتے ہوئے غشی سے اس کی موت بھی واقع ہوسکتی ہے۔

ان سب پریشانیوں کے باوجود نکول بہترین انجینئر ہے اور اس نے اپنے جیسے مریضوں کے لیے ایک خاص تکیہ ایجاد کیا ہے۔ اس تکیے سے صرف برطانیہ میں ہی ایسے 30 ہزار مریض استفادہ کرسکیں گے۔

نکول کو ایک اور الجھن درپیش ہے کہ وہ ٹی وی پر مزاحیہ یا ڈراؤنی فلم دیکھتے ہوئے پٹھوں کی اینٹھن کی شکار ہوکر کئی منٹ تک سکتے کے عالم میں رہتی ہے تاہم اس کے والدین اس قسم کی صورتحال سے اسے دور رکھنے کی کوشش کرتے ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here