بلاول بھٹو کے قافلے پر پتھراؤ کا مقدمہ درج: پولیس کا ملزمان کی شناخت کا دعویٰ

Raids under way to arrest suspects who attacked Bilawal's convoy in Lyari
Raids under way to arrest suspects who attacked Bilawal's convoy in Lyari

:کراچی

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کے قافلے پر لیاری میں پتھراؤ کرنے والے افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا جب کہ پولیس نے ملزمان کی شناخت کا دعویٰ کیا ہے۔

پولیس کے مطابق سرکار کی مدعیت میں درج مقدمے میں 13 مقامی افراد اور 400 سے زائد نامعلوم افراد کو نامزد کیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مقدمے میں حاجی باوا، رفیق بنگورہ اور اسماعیل سمیت 13 مقامی افراد نامزد ہیں جب کہ مقدمے میں بلوا کرنے، ہنگامہ آرائی اور دہشت گردی کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔

ایس ایس پی سٹی سمیع اللہ سومرو کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کی ریلی پر پتھراؤ کرنے والے افراد کی شناخت کرلی گئی ہے تاہم ملزمان گزشتہ روز ہی علاقے سے فرار ہوگئے۔

ایس ایس پی سٹی کے مطابق پتھراؤ کرنے والوں کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں، ملزمان کے موبائل فون نمبرز سے ان کی لوکیشن مل گئی ہے۔

 یاد رہے کہ گزشتہ روز چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری اپنے حلقہ انتخاب این اے 246 لیاری پہنچے اور ریلی کی صورت میں انتخابی مہم کا آغاز کیا۔

تاہم جیسے ہی ان کی ریلی بہار کالونی پہنچی تو علاقہ مکینوں کی بڑی تعداد سڑکوں پر نکل آئی اور قافلے کو روک لیا۔

مشتعل مظاہرین نے پیپلز پارٹی کے خلاف نعرے بازی کی اور بلاول بھٹو کے قافلے میں موجود گاڑیوں پر پتھراؤ کیا اور ڈنڈے بھی برسائے جس کے بعد انہیں فوری طور پر علاقے سے واپس جانا پڑا۔

دوسری جانب بلاول بھٹو زرداری نے اپنے ٹوئٹر بیان میں کہا کہ پتھراؤ احتجاج نہیں ہوتا، جب کوئی پتھر مارتا ہے تو وہ احتجاجی نہیں شر پسند بن جاتا ہے، انہوں نے سوال کیا کہ کل اگر کوئی بندوق چلانا شروع کردے تو کیا وہ بھی احتجاج ہوگا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا مزید کہنا تھا کہ انہیں لیاری کے لوگوں پر فخر ہے جنہوں نے تشدد کی سیاست کا جواب نہیں دیا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here