پنجاب کی سیاست اور پاک آرمی

AGHA WAQAR AHMED

:لاہور

آج پنجاب حکومت نے اپنے رویے سے  پاک افواج کو بادی النظر میں یہ پیغام دیا ہے کہ ان کے نزدیک   پاک افواج اور پاکستان کا تحفظ کرتے ہوئے جانیں قربان کرنے والے شہیدوں کی کوئی اہمیت نہیں بلکہ ان کے نزدیک سلطنت کی دولت  لوٹنے والے مجرم  زیادہ اہمیت کے حامل ہیں اور آج اس بات کا احساس اس وقت ہوا جب  قوم کا دفاع کرتے ہوئے اپنی جان کا نذرانہ دینے والے  سیکنڈ لیفٹیننٹ کا جسد خاکی ایوب اسٹیڈیم کی طرف  قافلے کی صورت میں رواں دواں تھا  تو پنجاب حکومت نے کسی قسم کا  ٹریفک روٹ نہیں لگایا  اور نہ ہی اس قافلے کے راستے میں آنے والی ٹریفک کو  منظم طریقے سے مینج کیا  بلکہ یہ قافلہ کئی جگہوں  میں عام ٹریفک  کے دباؤ میں الجھ کر رک گیا اور  چند منٹوں  کا فیصلہ ایک گھنٹے میں طے پایا  اگر اس جگہ  کسی کرپٹ، بد عنوان  سزا یافتہ،   عدالتی نا اہل ، جھوٹے، مکار ، عیار،اور دھوکے  باز  سیاست دان کا قافلہ  جانا ہوتا  تو سڑکوں پر روٹ لگا ہوتا یہ حکومت اپنے اس سزا یافتہ  مجرم  کو ائیر پورٹ سے  لیکر غیر قانونی  طریقے سے کمائی ہوئی  آمدن کے  محل تک  لے جانے  کے لئے عام پبلک  ٹریفک  کو دوسری جانب  منتقل کر دیتی ہے  کہ وقت کا ” گاڈ فادر”  کسی بھی عوامی ٹریفک اور انسان کا چہرہ  دیکھے بغیر  اپنے  محل  تک پہنچ جائے  جبکہ یہ حقیقت ہے کہ  اس محل کی بنیادوں سے  لیکر  درودیوار  تک قوم کی لوٹی ہوئی  دولت سے تعمیر کئے گئے اور پاکستان کی اعلیٰ ترین عدلیہ اسے اس زمرے میں  مجرم قرار دے چکی ہے مگر پنجاب حکومت اسے  سزا  پانے کے بعد جس انداز میں   اسلام آباد سے لاہور تک لائی  وہ انداز کسی ملک کے فاتح سپہ سالار کو  لانے کا انداز تھا  مگر شرم آتی ہے ان حکمرانوں پر کہ ایک شہید کا جسد  خاکی  نماز جنازہ کے لئے جب ایوب اسٹیڈیم  کی طرف گامزن تھا تو لاہور کی  بے ہنگم ٹریفک میں کئی دفعہ  رکا اور حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی تھی ۔

Punjab politics and Pak army
Punjab politics and Pak army

ایک شہید کے جنازے کے راستے پر یہ تذلیل کر کے حکومت پنجاب نے پاک افواج کو جو پیغام دیا وہ نہ صرف پاک افواج سمجھ چکی ہے  بلکہ مجھ جیسا ادنیٰ صحافی خون کے آنسو رو رہا ہے ۔

کیا آ ئیندہ قوم کا دفاع کرتے ہوئے  شہید ہونے والے تمام سپوتوں کے ساتھ یہی رویہ رکھا جائے گا؟؟؟

کیا اس قوم کی دولت لوٹنے والے  پروٹوکول کے ساتھ جانے کے حقدار ہیں  ؟؟؟؟

فیصلہ میں آپ پر چھوڑتا ہوں ۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here