سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات کیلئے نئی جے آئی ٹی تشکیل

Punjab home dept forms new JIT to probe Model Town tragedy
Punjab home dept forms new JIT to probe Model Town tragedy

:لاہور

محکمہ داخلہ پنجاب نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات کے لیے نئی جے آئی ٹی تشکیل دیدی۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے گزشتہ ماہ حکومت پنجاب کو سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دینے کا حکم دیا تھا۔

ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب کے مطابق جے آئی ٹی کے سربراہ آئی جی موٹر ویز اے ڈی خواجہ ہوں گے۔

محکمہ داخلہ پنجاب کی جانب سے جاری نوٹیفکینش کے مطابق کمیٹی میں آئی ایس آئی کی نمائندگی لیفٹیننٹ کرنل محمد عتیق الزمان، ایم آئی کی طرف سے لیفٹیننٹ کرنل عرفان مرزا اور ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل آئی بی محمد احمد کمال شامل ہوں گے۔

اس کے علاوہ ڈی آئی جی ہیڈکوارٹرز پولیس گلگت بلتستان قمر رضا جے آئی ٹی کے ممبر ہوں گے۔

ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ کے مطابق کمیٹی سانحہ ماڈل ٹاؤن سے متعلق معاملات کی تحقیقات کرے گی۔

پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے سانحہ ماڈل ٹاؤن پر نئی جےآئی ٹی کی تشکیل کا خیر مقدم کرتے کرتے ہوئے کہا کہ شہداء کے ورثاء کی ساڑھے 4 سال کے بعد شنوائی ہوئی ہے۔

طاہر القادری کا کہنا تھا کہ کوئی اور ہوتا تو کیس دفن ہو چکا ہوتا اور قبر کا نشان بھی نہ ملتا۔

خیال رہے کہ 17 جون 2014 کو ماڈل ٹاؤن میں پنجاب پولیس اور پاکستان عوامی تحریک کے ورکرز کے درمیان مڈبھیڑ میں 14 افراد جاں بحق اور 100 سے زائد زخمی ہو گئے تھے۔

اس وقت کی حکومت پنجاب نے واقعے کی تحقیقات کر کے لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر رپورٹ کو پبلک کر دیا تھا تاہم پاکستان عوامی تحریک کے ورکرز اور متاثرین نے تحقیقاتی ٹیم کے سامنے بیان دینے سے انکار کر دیا تھا۔

جسٹس ریٹائرڈ باقر نجفی کی زیر صدارت بننے والے کمیشن نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کو پاکستان کی تاریخ کا بدترین واقعہ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ پولیس نے پاکستان عوامی تحریک کے کارکنوں پر ہلہ بولنے کے احکامات دینے والے کا نام چھپانے کی کوشش کی۔

محکمہ داخلہ پنجاب کے مطابق نئی جے آئی سانحہ ماڈل ٹاؤن کی نئے سرے سے تحقیقات کرے گی۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here