سیالکوٹ میں احمدیوں کی عبادت گاہ مسمار، تحریک انصاف کی شدید مذمت

PTI condemns desecration of Ahmadi worship place in Sialkot
PTI condemns desecration of Ahmadi worship place in Sialkot

:اسلام آباد

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی جانب سے سیالکوٹ میں مذہبی اقلیت احمدیوں کی عبادت گاہ کو نشانہ بنائے جانے کی شدید مذمت کی گئی ہے۔

ٹوئٹر پر جاری کیے گئے اپنے بیان میں پاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت واقعے میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کرے اور تمام مذہبی اقلیتوں کو تحفظ فراہم کرے۔

واضح رہے کہ جمعرات (24 مئی) کو سیالکوٹ میں مقامی مشتعل ہجوم نے احمدیوں کی ایک تاریخی عبادت گاہ ‘بیت المبارک’ کو منہدم کر دیا تھا۔

رپورٹس کے مطابق عبادت گاہ کو صبح سحری کے وقت منہدم کیا گیا، اُس وقت وہاں کوئی موجود نہیں تھا۔

اس حملے کی ویڈیو اور تصاویر سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوگئیں، جن میں ایک مشتعل ہجوم کو عبادت گاہ کا مینار اور گنبد مسمار کرتا دیکھا جاسکتا ہے۔

ویڈیو میں دیکھا گیا کہ عبادت گاہ پر حملہ کرنے والے ہجوم کا لیڈر حامد رضا، جماعتِ اہلسنت اور انتظامیہ کا شکریہ ادا کر رہا ہے کہ انہوں نے اس عبادت گاہ کو منہدم کرنے میں مدد فراہم کی۔

اس واقعے کی سیاستدانوں اور دیگر افراد کی جانب سے بھی مذمت کی گئی، پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے احمدیوں کی عبادت گاہ مسمار کیے جانے کو ‘ناقابل قبول’ قرار دیا۔

کہا جاتا ہے کہ احمدی عقیدے کے بانی مرزا غلام احمد  سیالکوٹ میں اپنے دورِ ملازمت کے دوران مذکورہ  عبادت گاہ کو استعمال کرتے تھے، یہی وجہ ہے احمدیوں کے نزدیک یہ عبادت گاہ خصوصی مذہبی اور تاریخی اہمیت کی حامل ہے۔

یہ بھی واضح رہے کہ احمدی مذہبی اقلیت کی اس عبادت گاہ کو کسی بھی ممکنہ پرتشدد واقعے سے بچنے کے لیے حکام نے برسوں پہلے ہی بند کردیا تھا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here