وزیراعظم کی لیگی ارکان کو بجٹ منظوری کیلئے اسمبلی میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت

PM Abbasi instructed PML-N members to ensure attendance for approving budget in assembly
PM Abbasi instructed PML-N members to ensure attendance for approving budget in assembly

:اسلام آباد

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے مسلم لیگ (ن) کے اراکین اسمبلی کو بجٹ منظوری کے لیے ایوان میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کردی۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں مسلم لیگ (ن) کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں حکمراں جماعت کے ارکان کو نواز شریف کے بیان سے پیدا ہونے والی موجودہ صورتحال پر بریفنگ دی گئی اور وزیراعظم نے اراکین کو پارٹی گائیڈ لائن بھی دی۔

ذرائع کےمطابق دوران اجلاس وزیراعظم نے فاٹا انضمام سےمتعلق آئینی ترمیم کے بل پر ارکان کو اعتماد میں لیا جب کہ ارکان کو بجٹ منظوری کیلئے ایوان میں حاضری یقینی بنانے کی ہدایت بھی کی گئی۔

وزیراعظم نے کہا کہ بجٹ اجلاس کے دوران کورم کا مسئلہ پیدا نہیں ہونا چاہیے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے (ن) لیگ کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس کل دوبارہ طلب کیا ہے۔

یاد رہے کہ نواز شریف کے متنازع بیان پر سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار کیا گیا جب کہ قومی سلامتی کمیٹی نے بھی متفقہ طور پر نواز شریف کے بیان کو مسترد کیا۔

14 مئی کو قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے بعد وزیراعظم نے نواز شریف سے ملاقات کی اور پھر ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ وہ، شہباز شریف اور ان کی جماعت نواز شریف کے ساتھ کھڑی ہے۔

 نواز شریف کا متنازع بیان

ایک انٹرویو کے دوران ممبئی حملوں سے متعلق اپنے متنازع بیان میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ عسکری تنظیمیں نان اسٹیٹ ایکٹرز ہیں اور ممبئی حملوں کے لیے پاکستان سے غیر ریاستی عناصر گئے، کیا یہ اجازت دینی چاہیے کہ نان اسٹیٹ ایکٹرز ممبئی جا کر 150 افراد کو ہلاک کردیں، بتایا جائے ہم ممبئی حملہ کیس کا ٹرائل مکمل کیوں نہیں کرسکے۔

نواز شریف کے بیان پر بھارتی میڈیا نے اسے پاکستان کے خلاف استعمال کیا جب کہ ملکی سیاسی رہنماؤں کی جانب سے نواز شریف کے بیان کی شدید مذمت کی گئی۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں شہباز شریف نے گزشتہ روز جلسے کے دوران نواز شریف کے بیان کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایسا بیان نہیں دے سکتے۔

حکمراں جماعت کے ترجمان نے بھی وضاحتی بیان میں کہا کہ نواز شریف کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا تاہم اس کے باوجود نواز شریف نے ایک مرتبہ پھر کہا ہے کہ وہ اپنے بیان پر قائم ہیں۔

نواز شریف نے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر ممبئی حملوں سے متعلق دیا گیا بیان اپنے موبائل فون سے صحافیوں کو دوبارہ پڑھ کر سنایا اور کہا کہ چاہے جو کچھ بھی سہنا پڑے حق بات کروں گا اور میں نے جواب مانگا تھا میرے سوال کا جواب آنا چاہیے تھا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here