پاکستان کا مزید ایک ارب ڈالر کے یورو بانڈ جاری کرنے پر غور

Pakistan considers issuing of $1 billion euros bondsPakistan considers issuing of $1 billion euros bonds
Pakistan considers issuing of $1 billion euros bonds

اسلام آباد:

پیرس کلب کو دوبارہ ادائیگیاں شروع ہونے اور دیگر غیر ملکی مالی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے ساتھ ہی پاکستان مارچ 2018 میں ایک ارب ڈالر مالیت کے یوروبانڈ جاری کرنے پر غور کر رہا ہے تاکہ غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں تیزی سے ہونے والی کمی سے بچا جا سکے۔

سرکاری ذرائع نے گفتگو کرتے ہوئے ہفتے کے روز تصدیق کی ہے کہ حکومت نے یورو بانڈ کو ترجیح دینے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ اس بانڈ کو لانچ کرنے کے لئے کسی اثاثے کی ضرورت نہیں ہوتی۔

اسلامک سکوک جاری کرنے کے لئے اثاثوں کی بطور ضمانت ضرورت ہوتی ہے جیسے حکومت کو گزشتہ ماہ سکوک بانڈ جاری کرنے کے لئے موٹر وے کے ایک حصے کو رہن رکھنا پڑا تھا۔

پاکستان کو مالی سال کے لئے 6 ارب ڈالر کے بیرونی قرضے ادا کرنے ہیں جن میں سے 2.4 ارب ڈالر پہلے ہی ادا کیے جا چکے ہیں جبکہ باقی ماندہ 3.6 ارب ڈالر آئندہ 6 ماہ (جنوری تا جون 2018) میں ادا کیے جانے ہیں۔

پیرس کلب کے قرضے معاف کرانے کے بجائے پرویز مشرف حکومت نے نائن الیون کے بعد غیر ملکی قرضوں کو ری شیڈول کرانے کو ترجیح دی تھی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جنوری 2018 کے آخر میں توقع ہے کہ ایک بڑی ادائیگی واجب ہو جائے گی، اس لئے حکومت ہر ممکنہ ذریعے سے ڈالر کے حصول کے راستے تلاش کر رہی ہے۔

وزارت خزانہ کے ترجمان نے ہفتے کو بتایا کہ دباؤ کے باوجود پاکستان کے غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر کی سطح اطمینان بخش ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ عالمی طور پر اکاؤنٹنگ کے تسلیم شدہ معیار کی بنیاد پر پاکستان کو 2017-18 کے لئے درکار مجموعی فنانس کا تخمینہ 17 سے 18 ارب ڈالر ہے۔ مزید براں یہ وضاحت بھی کی گئی ہے کہ ملک کو درکار مجموعی بیرونی فنانسنگ کے لئے تمام انتظامات موجود ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here