نواز شریف چُھپا تماش بین – پارٹ 3

Nawaz Sharif hidden spectator Part 3
Nawaz Sharif hidden spectator Part 3

١٢ اکتوبر 1999ء کو نواز شریف  حکومت کی بر طرفی کے بعد  پرائم منسٹر ہاؤس سے  عیاشی کا جو سامان بر آمد ہوا  ، اس میں سیکسی بیڈ( جس پر عیاشی اور رنگینی کے تمام  لوازمات با اہتمام موجود ہوتے ہیں) ویاگرا گولیوں کا ایک بڑا  سٹاک ، بلیو پرنٹ ویڈیو  کیسٹس  اور غیر ملکی فحش رسائل شامل ہیں ۔ روزنامہ جنگ کی ایک خاص رپورٹ  جسے معروف صحافی کامران  خان نے مرتب کیا ہے  کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف  نے پرائم منسٹر ہاؤس میں لطیفے  اور گانے سنانے والے دوست ٹھہرا رکھے تھے  جو نواز شریف کے لئے محافل سناتے اور انہیں خوش رکھتے تھے۔

 قومی احتساب بیورو  کے انتہائی  مصدقہ  ذرائع  نے گزشتہ  روز اس امر کی تصدیق کی ہے  کہ معزول وزیراعظم  کے خلاف باتھ رومز کے لئے   مساج اور  مالش کی تربیت کے لئے  سرکاری خرچ پر  4 حسین  خواتین  اور 5 مردوں کو  فرانس  بجھوانے کے  کیس کی تحقیقات  مکمل کر کے   ان مرد و خواتین کے دفعہ  161 کے تحت  بیان قلمبند  کر لئے گئے ہیں اور آئیندہ چند روز میں تحقیقاتی  ایجنسی مذکورہ  افراد کے مجسٹریٹ  کے سامنے  بیانات  قلمبند  کروا کے  ” حمام  ریفرنس ” کے نام سے کیس عدالت بھیجے گی۔ معتبر ذرائع نے اے این این کو بتایا کہ   لاہور سے تعلق رکھنے والے  لکشمی چوک کی رہائشی (ط) نے  احتساب بیورو  کے اعلیٰ حکام کے سامنے  رضا کارانہ   سنسنی خیز انکشافات  کئے اور اپنے باقی ساتھیوں کے نام  بتاتے ہوئے کہا کہ  مجھے ہر ہفتے خصوصی طور پر اسلام آباد بذریعہ جہاز لایا جاتا  اور یہاں وزیر اعظم ہاؤس میں ” خصوصی خدمات”  سر  انجام  دینے کے بعد  واپس لاہور کے لئے  روا نہ  کر دیا جاتا ۔  (ط)  نے بتایا کہ  ان دو  شیزاؤں  اور  مردوں  نے  3  سے 6 ماہ  کا عرصہ  سرکاری  خرچ   پر بیرون  ملک گزرا ۔ نواز شریف کے شاہانہ  انداز میں بنے ہوئے  ان باتھ رومز میں خواتین کے مساج کے لئے  بیڈن روڈ سے تعلق رکھنے والے  2 افراد کو خصوصی تربیت بھی دلوائی گئی۔ ذرائع نے بتایا کہ تحقیقاتی ادارے نے  فرانس میں  تربیت کے لئے  بھجوائی جانے والی 4حسین و جمیل دوشیزاؤں کے بارے میں بھی تفصیلات جمع کی ہیں ، جس سے ہوشربا داستانیں سامنے آئی ہیں۔ نواز شریف نے اس خصوصی باتھ روم کا نقشہ  انٹروڈ موبل پرائیویٹ  لمٹیڈ  گلبرگ لاہور سے خصوصی  ہدایات کے ساتھ بنوایا   تھا،  جس میں 19 ملی میٹر  کے شیشے  اور10 فٹ کے آئینے  نصب کروائے گئے تھے ، ذرائع کا کہنا ہے کہ  نواز شریف نے  14×28  فٹ  باتھ روم کے لئے قومی خزانہ  سے لاکھوں ڈالرز کا سامان در آمد کیا ، جس پر ابھی تک ڈیوٹی ادا کرنے سے  متعلق کوئی کاغذات  احتساب بیورو کو پیش نہ کئے جا سکے  ہیں ۔افسوس ناک امر یہ ہے کہ باتھ روم کے  نلکوں پر سونے کا پانی چڑھوایا  جبکہ اسی مالیت سے  کسی  غریب گھرانے کی بیٹی  کی رخصتی کی جا سکتی  تھی ۔اس باتھ روم میں گھومنے والا خصوصی  رنگین ٹیلی وژن  اور گندی فلموں کے لئے وی سی آر بھی موجود ہے ۔موسم کے مطابق  ٹھنڈا اور گرم رکھنے والے اے سی اور  دو آرام دہ کرسیاں بھی ، ایک کونے میں چکوری بکس ،مساج  کروانے کے لئے گول ایرانی قالین  ، نہانے کے ٹب میں  داخلے کے لئے  صندل کی  خوشبودار لکڑی کی  سیڑھیاں ، ایک باتھ روم میں دو واش بیسن  ،بیلجیم سے در آمد کردہ  شیشے کے شلف  اور ورزش کرنے کا قیمتی سامان بھی نصب  کیا گیا ۔ پاکستان کے عوام کے لئے اس سے بڑا المیہ اور کیا ہو گا   کہ غریب غربت کے باعث ملک میں   خود کشیا ں اور خود سوزیاں کر رہے ہیں   اور وقت کا وزیراعظم   عظیم الشان باتھ روم میں  گھنٹوں مساج اور ٹی وی دیکھنے میں  مصروف رہتا۔ احتساب بیورو کے  ذرائع نے مزید بتایا کہ  (ط) نے یہ بھی انکشاف کیا کہ  ایک سائل ( چن زیب)  جس وقت  ماڈل ٹاؤن کی کھلی  کچہری  میں انصاف نہ ملنے پر خود سوزی کر رہا تھا تو  معزول وزیر اعظم نواز شریف  اس وقت باتھ روم میں (ط) کے ہاتھوں  مساج کروا رہے تھے  ۔توقع یہ ہے کہ  آئیندہ چند روز میں ” حمام ریفرنس”  کے نام سے  یہ ریفرنس  عدالت کو بھجوا دیا جائے گا۔

نواز شریف چُھپا تماش بین

مزید بر آں  معزول  نواز حکومت  کے دور میں  عرب شہزادوں  کی ” خدمت”  کے لئے سرکاری سطح  پر شراب  و شباب  فراہم  کرنے کا انکشاف  ہوا ہے  ” مقبول اداکارہ  جاناں ملک نے  عرب شہزادوں کی تواضع کی ۔ذرائع کے مطابق  سابقہ دور حکومت میں  ایک عرب ریاست کے  ولی عہد  کے دورہ پاکستان  کے ہمراہ جو وفد آیا تھا  ، اس کی رہائش کے لئے مقامی فائیو سٹار ہوٹل  کے چالیس کمرے اور فلم انڈسٹری کی  خوبصورت ترین “کلیوں ” خصوصی طور پر  حکومتی سطح پر  بک کیا تھا ۔ ذرائع کے مطابق  ماضی کی معروف اداکارہ  سویٹی کی بیٹی اور  اداکارہ جاناں ملک کو ان مہمانوں کا دل بہلانے کے لئے  بک کر لیاتھا  اور اس دوران جاناں  ملک نے   ایک رات میں مہمانوں کا دل بہلانے کے لئے  8 لاکھ روپے کی رقم وصول کی تھی  ۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ  جاناں ملک مذکورہ رات کو  مقامی فائیو سٹار ہوٹل کے تقریباََ  5 کمروں میں مہمان نوازی کے فرائض سر انجام دیتی رہیں ۔ یہ بھی معلوم ہوا کہ  کہ جاناں ملک کے ہمراہ  فلم انڈسٹری کی دیگر اداکاراؤں اور دیگر ماڈلز کو بھی  مہمان نوازی کی خدمت کے لئے بک کیا گیا  لیکن اداکارہ جاناں ملک کو  پڑھی لکھی اور روانگی سے انگریزی  بولنے کی زیادہ رقم سے نوازا گیا   تھا۔

دلشاد بیگم اور  نواز شریف کے اسکینڈلز  پر ملکی میڈیا نے بہت کچھ چھپایا ۔ جبکہ مسلم لیگ (ن) والے اسےسوچی سمجھی سازش  قرار دیتے رہے  ۔ اسی دوران یہ باتیں بھی منظر عام پر آئیں  جن میں دعویٰ کیا گیا ۔ لاہور ، اسلام  آباد، مری ، بھوربن میاں نواز شریف کی “رنگین راتوں “کے گواہ ہیں  ۔ جبکہ ایک اخبار میں  یہ اعلان بھی آیا کہ  ہم ملک کے سینئر  صحافیوں  کی موجودگی  اور بند کمرے میں  نواز لیگ کے  معززین  کے  اعزاز  میں ایسی نمائش  کر سکتے ہیں  کہ  ان کے  چاروں طبق روشن ہو جائیں۔

طاہرہ سعید  اور دلشاد بیگم  صرف دو خواتین  ہی میاں نواز شریف کی  منطور  نظر  نہیں رہیں  بلکہ  ان میں  کئی  اور پردہ  نشینوں  کے نام بھی آتے ہیں  ایک دور میں یہ بات بہت مشہور  ہوئی کہ  فلم انڈسٹری میں  کسی بھی ہیروئن کی کامیابی کا راستہ  ماڈل ٹاؤن سے ہو کر جاتا ہے۔

آخر حرام کی کمائی  ہو یا گناہ کا بیج ، اپنا اثر دکھا کے چھوڑتا ہے ۔ سو نواز شریف کی سیاہ کاریاں ان سے آگے ان کی نسل میں بھی منتقل ہو چکی ہیں ۔ 1997ء کے انتخابات کے دوران  شریف برادران کے دونوں ہونہار فرزند  حسین نواز اور حمزہ شہباز  لاہور کے انٹر نیشنل  ہوٹل کے کمرہ نمبر 103 میں رنگ رلیاں منایا کرتے تھے ۔حسین نواز جہاں انتخابی مہم چلا رہے تھے  وہاں ان کے ساتھی حسیناؤں کی تلاش میں  بھی رہتے تھے ۔ ایسی حسیناؤں میں کئی تو  ضرورت مند دوشیزائیں بھی تھیں ۔ جو مالی مفادات کی خاطر ہوٹل انٹر نیشنل میں حمزہ شہباز  اور حسین نواز کے ساتھ ملاقاتوں پر مجبور تھیں  لیکن وہ لڑکیاں  ان دو نوجوان  ” بچوں ” کے دل میں راہ کرتی تھیں  جن میں ایک شو بزنس کی معروف کردار  میڈم صدیقی کی بیٹی عارفہ صدیقی ہیں  جبکہ دوسری ارم حسن  اس وقت ٹی وی ڈراموں میں بکثرت  پائی جاتی ہے۔ ان دنوں یہ ہوٹل نواز شریف کے ایک ساتھی کی ملکیت تھا۔جسے بعد میں کو آپرٹیو سکینڈل میں دھر لیا گیا۔ وہ مدد کے لئے نواز شریف کے پاس گیا تو بڑے میاں حاجی شریف نے  کہا” اعوان صاحب اسیں تہاڈی کوئی مدد نئیں کراں گے تسیں تے ساڈے منڈے وی ہوٹل وچ خراب کر دتے” ( اعوان صاحب ہم آپ کی کوئی مدد نہیں کریں گے آپ نے تو ہمارے بچے بھی ہوٹل میں خراب کر دئے ہیں )

ؔ اب پچھتائے کا ہوت  جب چڑیاں چگ گئیں کھیت

حال ہی میں اداکارہ ریما نے  نواز شریف کی حمایت میں بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ  فوج نے نواز شریف کی حکومت کو بر طرف کر کے اچھا قدم نہیں اٹھایا ۔ فلم قسمت کے سیٹ پر  صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے  انہوں  نے کہا کہ ملک میں جمہوری نظام بہت ضروری ہے  اور نواز حکومت نے جو بھی قدم  اٹھایا وہ سب ملک و قوم  کی بھلائی کے لئے ہی اٹھایا  انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور شہباز شریف نے ملک و قوم کو  ترقی کی راہ پر لگایا  لیکن جب پاکستان  21ویں صدی میں شان و شوکت سے داخل ہونے  والا تھا کہ اسی وقت فوج نے مداخلت کر دی ۔ ریما نے کہا کہ میں یہ سب کچھ ڈنکے کی چوٹ پر کہ رہی ہوں  مجھے امید ہے کہ نواز شریف اورشہباز شریف کو لوگ یاد کریں گے کہ انہوں  نے ہمیشہ ملک کی بھلائی کے لئے  ہی سوچا اور اس کا صلہ  انہیں  یہ ملا کہ ناکردہ گناہوں کی  سزا دی جا رہی  ہے ۔

رقم بڑھاؤ نواز شریف ہم تمہارے ساتھ ہیں

نواز شریف چُھپا تماش بین – پارٹ 2

جناب  یہ ہیں  میاں  نواز شریف جنہیں خاص حلقوں میں جی۔1 اور بی۔ٹی کے نام سے پکارا جاتا ہے ۔ جبکہ نواز شریف کے نقی بٹ سے ” تعلقات” بھی اب پوشیدہ نہیں رہے حال ہی میں ایک اخبار نے  ان تعلقات پر خصوصی اشاعت کا اہتمام کیا ۔ جس سے بخوبی اندازہ ہوتا ہے کہ  جناب نواز شریف موٹر وے کے ساتھ ساتھ جی،ٹی روڈ  پر سفر کرنے کے بھی عادی ہیں ۔

ادارے کا  اس رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں  چونکہ یہ کہانی  ( پارلیمنٹ سے بازار حسن تک)  سے ماخذ ہے ۔

میرا آپ کو مشورہ ہے کہ لیڈروں کے انتخابات میں ہمیشہ احتیاط کریں۔ آدھی جنگ تو لیڈروں کے صحیح انتخابات سے ہی جیت لی جاتی ہے۔

بانی پاکستان حضرت قائداعظم محمد علی جناح’جلسہ عام حیدرآباد دکن 11 جولائی 1946ء

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here