پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) کے لاہور سے قومی اسمبلی کے امیدواران

National Assembly candidates from Pakistan Tehreek-e-Insaf and PML (N)
National Assembly candidates from Pakistan Tehreek-e-Insaf and PML (N)

:لاہور

:پاکستان تحریک انصاف کے لاہور سے قومی اسمبلی کے متوقع اُمیدوار

این اے 123 = مہر واجد سلیم
این اے 124 = ولید اقبال
این اے 125 = ڈاکٹر یاسمین راشد
این ا ے 126 = حماد اظہر
این اے 127 = جمشید چیمہ
این اے 128 = اعجاز ڈیال
این اے 129 = عمران خان
این اے 130 = شفقت محمود
این اے 131 = علیم خان
این اے 132 =منشاء سندھو
این اے 133 = اعجازچوہدری
این اے 134 = ظہیرعباس کھوکھر
این اے 135 = کرامت کھوکھر
این اے 136 = خالد گجر

:مسلم لیگ (ن) کے لاہور سے قومی اسمبلی کے متوقع اُمیدوار

حاجی ملک ریاض (این،اے123)
میاں حمزہ شہباز (این،اے124)
مریم نواز شریف (این،اے125)
میاں مرغوب احمد (این،اے126)
محمد ملک پرویز (این،اے127)
شیخ روحیل اصغر (این،اے128)
سردار ایاز صادق (این،اے129)
خواجہ احمد حسان (این،اے130)
خواجہ سعد رفیق (این،اے132)
سید زعیم قادری (این،اے133)
میاں محمد شہباز شریف (این،اے134)
سیف الملوک کھوکھر (این،اے135)
ملک افضل کھوکھر (این،اے136)

ذرائع کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کی ٹکٹیں اس لئے تقسیم نہیں ہو سکیں کہ شہباز شریف کا میٹنگ کے دوران ایک قریبی ساتھی اور عزیز سے اصولی اختلاف ہوا اور اسکے بعد وہ میٹنگ چھوڑ کر چلے گئے۔ شہباز شریف نے مسلم لیگ ہاؤس میں انٹرویو لینے کا سلسلہ شروع کیا جس میں فیصل آباد کی امیدواروں کے انٹرویو تھے اسی دوران انہیں کوئی ایسا پیغام دیا گیاجس پر انہیں غصہ آیا اور وہ تھوڑی دیر بعد اٹھ کر چلے گئے اور بعد میں میاں صاحب نے پیغام بھیجا کہ میری طبیعت ٹھیک نہیں ہےتو آپ خود ٹکٹیں تقسیم کر دیں ۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف اور مریم نواز میں ٹکٹوں کی تقسیم پت شدید اختلاف چل رہا ہےجو عنقریب عوام کی معلومات میں آ جائے گا کیونکہ ابھی بھی نواز شریف صاحب کی کوشش ہے کہ وہ مسلم لیگ ن پر اپنا مکمل اختیار رکھیں جبکہ شہباز شریف صدر پاکستان مسلم لیگ ن ہونے کی حیثیت سے اپنا کام آزادی سے کرنے کے خواہاں ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here