ای سی ایل میں نام ڈالنا وزارت داخلہ اور نیب کا صوابدیدی اختیارہے: وزیرقانون

NAB, Interior Ministry have discretion to place names on ECL: law minister
NAB, Interior Ministry have discretion to place names on ECL: law minister

:اسلام آباد

وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم کا کہنا ہے کہ عدالتوں میں سماعت کے بغیر بھی کسی کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کیا جاسکتا ہے اور ای سی ایل میں نام ڈالنا وزارت داخلہ اور نیب پراسیکوٹنگ ایجنسیز کا صوابدیدی اختیار ہے۔

میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ وزارت داخلہ یا نیب ای سی ایل میں نام تب ڈالنے کی سفارش کرتی ہے جب شبہ ہو کہ ملزم ملک میں واپس نہیں آئے گا، وزارت داخلہ اور ایف آئی  اے حکام ای سی ایل میں شامل کردہ ناموں کی فہرست سپریم کورٹ میں پیش کریں گے۔

وفاقی وزیر قانون نے کہا کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ سامنے آنے سے کسی چیز پر سمجھوتا نہیں ہوگا اور ملزمان کے لیے سمجھوتہ نہیں ہونا چاہیے تاہم انہیں دفاع کا حق حاصل ہے۔

ای سی ایل میں بڑے نام آنے پر فروغ نسیم نے کہا کہ  میڈیا آزاد ہے اور خبر اتنی بڑی ہے کہ باہر تو آنی ہے، ہر کسی کی عزت کرنی چاہیے لیکن احتساب کا عمل چلنا چاہیے۔

ایک سوال پر وزیر قانون کا کہنا تھا کہ خواجہ آصف کا نام کابینہ کے اجلاس میں زیر غور نہیں آیا، حکومت نے وہ کرنا ہے جس سے قانون اور آئین پر عملددرآمد ہو۔

وفاقی وزیر قانون نے کہا کہ حکومتی نمائندوں کے خلاف بھی اگر ثبوت ملے تو ان کا نام بھی ای سی ایل میں ڈالا جائے گا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here