ہالی ووڈ فلموں میں ذہانت سے بھرپور حیرت انگیز مناظر

Intelligent scenes in Hollywood movies
Intelligent scenes in Hollywood movies

 :واشنگٹن

ہالی ووڈ فلموں میں بعض ایسے مناظر بھی شامل کیے جاتے ہیں جنہیں صرف سنجیدہ افراد ہی محسوس کرسکتے ہیں۔ اگر یہ مناظر فلم میں شامل نہ بھی ہوں تب بھی اس پر کوئی اثر نہیں پڑتا لیکن یہ مناظر اور ان کی تفصیلات کا مقصد ایک جانب تو ہدایت کار کی ذہانت کو ظاہر کرتا ہے تو دوسری جانب فلم کے پلاٹ کو حقیقت اور روزمرہ زندگی سے قریب دکھاتا ہے۔

نیچے بعض ایسی فلموں کی تصاویر اور مناظر پیش کیے جارہے ہیں جو اپنی نوعیت میں شاہکار فلمیں تھیں اور تاریخ کا حصہ بن گئیں۔ آغاز کرتے ہیں شہرہ آفاق فلم ٹائی ٹینک کے ایک اہم منظر سے۔

film titanic

فلم ٹائی ٹینک کے شروع میں جب بوڑھی روز اپنی کہانی سناتی ہے تو جیک کو جہاز کے ہال میں سیڑھیوں کے پاس کھڑا دکھایا جاتا ہے۔ عقب میں لگی کھڑی رات کے 2 بج کر 20 منٹ دکھارہی ہوتی ہے۔ یہ عین وہی وقت ہے جب ٹائی ٹینک مکمل طور پر ڈوب چکا تھا۔

leygo film

لے گو فلم میں جب بھی نیا کردار تیار ہوکر سامنے آتا ہے اس پر انسانی فنگر پرنٹ کا نشان نمایاں ہوتا ہے جیسا کہ اس کردار پر دیکھا جاسکتا ہے۔غور کریں کہ کردار کی شرٹ پر دائیں جانب چمکیلی پٹیوں پر انگلیوں کے نشانات ثبت ہیں۔

bat man return

بیٹ مین ریٹرنز فلم میں اداکارہ سیلینا کائلز کیٹ وومن میں بدل رہی ہے اور اس سے قبل ان کی عینک کا سایہ کیٹ وومن کے سائے کی مانند نظر آرہا ہے۔

matrix

مشہورِ زمانہ فلم میٹرکس کے ایک منظر میں دروازے کے ہینڈل کو دکھایا گیا ہے جس میں دوکرداروں کا عکس نظرآرہا ہے۔ اس منظر کو فلمانے کے لیے کیمرے کو بڑی مہارت سے ایک کوٹ میں چھپایا گیا۔

trueman show

ٹرومین شو فلم میں ٹرومین کو دکھایا گیا ہے کہ وہ دھوپ میں باہر کم کم نکلتا ہے۔ اس سے وٹامن ڈی کی کمی واقع ہوتی ہے اور اس کے ازالے کے لیے ٹرومین کو وٹامن ڈی کی گولیاں استعمال کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ اس منظر میں ایک بوتل میں وٹامن ڈی سپلیمنٹ بھرے ہیں۔

forgo

1996ء کی مشہور فلم فارگو میں کارل اس وقت ایک جملہ بول رہا ہے کہ سب کچھ 30 منٹ میں مکمل ہوجائے گا۔ اس کے ٹھیک 30 منٹ بعد فلم ختم ہوجاتی ہے۔

intrastelar

انٹراسٹیلر فلم میں ہدایت کار کرسٹوفر نولان نے 500 ایکڑ پر اصلی مکئی کے کھیت اگائے تھے اور وہ اس کے کمپیوٹر گرافکس یا اینی میشن کی بجائے حقیقی کھیت دکھانا چاہت تھے۔ عکس بندی کے بعد اس کھیت کی فصل فروخت کرکے منافع بھی کمایا گیا۔

up1

سال 2009ء کی اینی میشن فلم ’اَپ‘ میں وقت کے ساتھ ساتھ عقب میں عمارتیں تعمیر ہوگئی ہیں جو ان دو مناظر سے عیاں ہیں۔

plip fiction

پلپ فکشن میں جان ٹریوولٹا نے ونسنٹ ویگا کا کردار ادا کیا ہے جو بہت زیادہ ہیروئن پیتا ہے۔ اس کردار کو کئی مرتبہ بیت الخلا میں دکھایا گیا ہے کیونکہ ہیروئن پینے سے قبض کی شدید کیفیت پیدا ہوسکتی ہے۔

polter gaste

پولٹرگیسٹ فلم میں ایک تالاب میں ڈھانچے دکھائے گئے ہیں۔ ایک منظر میں اداکارہ جوبتھ ولیمز کو ڈھانچوں کے ساتھ فلمایا گیا ہے۔ بعد میں خاتون اداکارہ کو بتایا گیا کہ تمام ڈھانچے اصلی تھے کیونکہ اس زمانے میں ربڑ کے ڈھانچے بننا شروع نہیں ہوئے تھے۔ یہ تمام انسانی پنجر ایک میڈیکل یونیورسٹی سے ادھار لیے گئے تھے۔

shuwshanik

کلاسیکی فلم ’شوشینک ریڈمپشن‘ میں مورگن فری مین کی جوانی کی تصویر میں اس کے بیٹے کو لیا گیا ہے جو کوئی اداکار تو نہیں ہیں لیکن مورگن سے مشابہت رکھتے ہیں۔

avengers

یہ دو مناظر غور سے دیکھئے: ایک منظر ’ایوینجر دی ایج آف الٹران‘ کا ہے جس میں ٹاور پر لگا گھڑیال ایک اور مجسمے سے تبدیل کردیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ یہ گھڑیال ایوینجر کی پہلی فلم میں تباہ ہوگیا تھا۔ اس فلم کا پورا نام ’ایوینجر دی بیٹل آف نیویارک‘ تھا۔

the edge of little toster

’دی ایج آف لٹل ٹوسٹر‘ نامی کارٹون فلم میں بلینکی کردار گھر کی صفائی کرتا ہے تاہم گھر کی دیواروں کے اسی حصے کو صاف دکھایا گیا ہے جو بلینکی کی پہنچ میں تھا۔

toy story

’ٹوائے اسٹوری‘ کے پہلے حصے میں ایک بہت بدتمیز اور شرارتی لڑکا سِڈ دکھایا گیا ہے۔ ’ٹوائے اسٹوری تھری‘ میں اسی لڑکے کو کچرا اٹھانے کے کام پر مامور دکھایا گیا ہے۔ کہانی کا سبق یہ ہے کہ بدتمیز رہوگے تو کبھی اچھے عہدے تک نہیں پہنچ سکوگے۔

loard of the ring

’لارڈ آف دی رنگز کے پہلے پارٹ ’دی فیلو شپ آف دی رنگ‘ کے مشہور کردار گینڈاف کو ایک منظر میں طویل کاغذی طومار(اسکرول) پڑھتے دکھایا گیا ہے جسے پڑھتے ہوئے دوسرے منظر میں موم بتیاں پگھل کر چھوٹی رہ گئی ہیں۔

toy story 2

’ٹوائے اسٹوری‘ ون اور تھری کے دو مناظر ملاحظہ کیجیے: پہلے اینڈی اسکول میں تھا اور اس کی لکھائی خراب تھی اس کے بعد اینڈی کالج چلا گیا اور اس کی ہینڈ رائٹنگ بہتر ہوگئی۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here