’عمران خان کے بنی گالہ کے گھر کا این او سی جعلی قرار‘

Imran Khan's Bani gala house's NOC declares fake
Imran Khan's Bani gala house's NOC declares fake

:اسلام آباد

سابق سیکریٹری یو سی بارہ کہو محمد عمر نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے بنی گالہ کے گھر کے این او سی کو جعلی قرار دیدیا۔

بنی گالا میں تجاوزات کے خلاف کیس میں اپنا تحریری بیان سپریم کورٹ میں جمع کرایا گیا ہے، محمد عمر کی جانب سے جمع کرائے گئے بیان میں کہا گیا کہ میں 2003ء میں یو سی بارہ کہومیں سیکرٹری تعینات تھا اور بنی گالہ میں عمران خان کی رہائش گاہ کی تعمیر کے حوالے سے درخواست پرمزید کارروائی کیلئے بنی گالہ کا نقشہ طلب کیا گیا تھا، عمران خان کی جانب سے نقشہ فراہم نہیں کیا گیا جس کے بعد مزید کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔

محمد عمر نے مزید بتایا کہ اس وقت یونین کونسل کے دفترمیں کمپیوٹرکی سہولت ہی موجود نہیں تھی اور تمام دفتری امور ہاتھ سے ہی نمٹائے جاتے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی بنی گالہ کے گھرکے نقشے اوراین او سی سے متعلق اہم انکشافات کرتے ہوئے کہا کہ یونین کونسل نے عمران خان کے گھرکی تعمیر کے لیے این او سی جاری نہیں کیا اور عدالت کو فراہم کی گئی دستاویز پرتحریربھی یونین کونسل کی نہیں ہے۔

خیال رہے کہ اسلام آباد کی کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے مئی 2017 میں سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی اپنی رپورٹ میں بنی گالہ کی 122 عمارتوں کو غیر قانونی قرار دیا تھا جس میں عمران خان کی رہائشگاہ بھی شامل تھی۔

سی ڈی اے نے اپنی رپورٹ میں عمران خان کے بنی گالہ کے گھر کی تعمیر کو خلاف قانون قرار دیا تھا۔

رواں ماہ 13 فروری کو سپریم کورٹ نے بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات سے متعلق کیس کے دوران عمران خان کی رہائشگاہ کی تعمیرات کے کاغذات طلب کیے تھے۔

کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے خبردار کیا تھا کہ اگر بنی گالہ میں ہونے والی تعمیرات سی ڈی اے کے قوانین کے مطابق نہ ہوئیں تو انہیں گر ا دیا جائے گا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here