گوادر: سمندر سے پکڑی گئی نایاب مچھلی 11 لاکھ روپے سے زائد میں نیلام

Gwadar: Rare fish known for medical use auctioned at whopping Rs 1.14m
Gwadar: Rare fish known for medical use auctioned at whopping Rs 1.14m

:پشکان

بلوچستان کے شہر گوادر کے قریب پشکان کے سمندر سے پکڑی گئی ایک نایاب مچھلی کو 11 لاکھ روپے سے زائد میں نیلام کردیا گیا۔

ماہی گیر ذرائع کے مطابق مقامی طور پر یہ مچھلی ‘سووا’ (sowa) اور ‘کِر’ (kir) کے نام سے مشہور ہے جو پشکان کے سمندر سے ایک مقامی ماہی گیر نے دور روز قبل پکڑی تھی۔

اس مچھلی کا وزن تقریباً 41 کلوگرام تھا، جو اپنے سینے اور معدے میں پائے جانے والے ایک خاص مادےکی وجہ سےنایاب سمجھی جاتی ہے اور جسے جراحی کے لیے مخصوص ادویات میں استعمال کیا جاتا ہے۔

ذرائع کے مطابق اس مچھلی کو کراچی کی ایک فشنگ کمپنی نے گوادر جیٹی پر نیلامی میں خریدا، جس کی قیمت تقریباً 11 لاکھ 48 ہزار روپے لگائی گئی۔

ماہی گیر ذرائع کے مطابق یہ مچھلی اس لیے نایاب ہے کیوں کہ یہ ماہی گیروں کے جال میں شاذو نادر ہی پھنستی ہے، تاہم موجودہ سیزن میں چونکہ یہ مچھلی انڈے دینے ساحل پر آتی ہے تو ماہی گیروں کے جال میں پھنس جاتی ہے۔

’سووا‘ یا ’کِر‘ نامی اس مچھلی کے بارے میں گوادر اور ملحقہ ساحلی علاقوں میں ایک تاثر عام ہے کہ جس ماہی گیر کے جال میں یہ مچھلی پھنس جاتی ہے، اس کے وارے نیارے ہوجاتے ہیں۔

ماحولیاتی ماہر اور گوادر ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کے ایک سینئر اہلکار عبدالرحیم کے مطابق گزشتہ سال اسی نسل کی دس سے زائد مچھلیاں پکڑی گئیں جو ایک کروڑ روپے سے زائد میں نیلام ہوئی تھیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ مقامی ماہی گیروں سے یہ مچھلی خرید کر کراچی لے جائی جاتی ہے، جہاں اس کے مزید اچھے دام ملتے ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here