چیئرمین عام عوام پارٹی سہیل ضیا بٹ کا آغا وقار احمد کے ساتھ خصوصی انٹرویو – پارٹ 3

exclusive interview of Chairman AAP Sohail Zia Butt with Agha Waqar Ahmed - Part 2
exclusive interview of Chairman AAP Sohail Zia Butt with Agha Waqar Ahmed - Part 2

:لاہور

چیئرمین عام عوام پارٹی سہیل ضیا بٹ کا آغا وقار احمد کے ساتھ خصوصی انٹرویو ہوا جس میں اُن سے بہت سے اہم سوالات کیے گئے اور ان سوالات کا پہلا حصہ آپ نیچے دیے گئے لنک پر پڑھ سکتے ہیں۔

چیئرمین عام عوام پارٹی سہیل ضیا بٹ کا آغا وقار احمد کے ساتھ خصوصی انٹرویو – پارٹ 2

:باقی سوالات کا سلسلہ کچھ ہوں ہے

نواز اور شہباز شریف نے ایک اشٹام پیپر پر بیانِ حلفی دیا کہ ان کی آپ سے کوئی رشتہ داری نہیں جبکہ پورا پاکستان جانتا ہے کہ آپ کا ان سے کیا رشتہ ہے۔ اس بارے آپ کی رائے ہے؟

میں نے زندگی میں کبھی نہیں کہا کہ میری ان کے ساتھ   رشتہ داری نہیں ہے  انہوں نے یہ نہیں کہا تھا کہ ہماری سہیل کے ساتھ کوئی رشتہ داری نہیں ہے انہوں نے یہ کہا تھا کہ  ہمارا بہنوئی یوسف عزیز ہے ہاں میں نے2008 میں   بھر پور جلسے میں کہا تھا کہ   میری کسی سے کوئی رشتہ داری نہیں ہے  میری رشتہ داری ان کچی آبادیوں میں رہنے والے لوگوں سے ہے، گنگاہائش فیکٹری میں ،  شورا کوٹی میں، گاندھی پارک میں ،کنال پارک میں  اور آبادی نثار آرٹ  پریس میں ، مریم کالونی میں،ماڈل کالونی میں،چکیاں میں ،بھابڑہ میں، گوپال نگر میں، جوں نالہ میں، پنڈی کوٹ لکھپت میں، تلہ ، گرین ٹاؤن اور ٹاؤن شپ میں   جو آبادیاں ہیں  یہ میری دست راست  اور میری رشتہ دار ہیں  میں ان کی بات  کانوں سے نہیں دل سے سنتا ہوں اور دماغ میں بٹھا لیتا ہوں ۔

آپ یقین کریں کہ یہ سب باتیں میں نے بر ملا کہیں تھیں اور شہباز شریف وہاں موجود تھے۔

آپ میں اور شہباز شریف میں وجہ اختلاف کیا ہے؟

میری میاں شہباز شریف صاحب سے ہم آہنگی نہیں رہی حالنکہ میں اپنے لیڈر کا بھائی ہونے کی وجہ سے  ان کا احترام کرتا  رہا  لیکن ان کے کچھ معاملات میں وہ مجھ سے کچھ نالاں تھے یعنی میرا ایک مقام ہونا ، پارٹیز میں ایسا ہوتا ہی ہے  کہ ایک بندہ جو بہت آگے جا رہا ہو تو مخالف اس سے رقابت رکھتا ہے ۔

سال 2008 میں آپ کے بیٹے  کو ٹکٹ کا ملنا  اور 2013 میں ٹکٹ کا نہ ملنا  اور پھر 2016 میں آپ کا پارٹی  اناؤنس کرنا  اس درمیان آپ کا کیا رشتہ ہے ؟  آپ کو مسلم لیگ چھوڑنے اور اپنی سیاسی جماعت بنانے کی ضرورت کیوں پیش آئی کیا یہ مسلم لیگ کی ٹیم (بی) تو نہیں؟

نہیں یہ بات نہیں ہے بات در اصل یہ ہے کہ

وہ شکست خوردہ شاہیں ، جو پلا  ہو گردشوں میں
اسے کیا معلوم کیا ہوتی ہے رسم شاہبازی

 ہم سونے کا نوالہ لے کر سیاست میں نہیں آئے تھے ، کالج کے زمانے میں الیکشن لڑا ، کوٹ لکھپت جیسی آبادی سے سیاست کا آغاز کیا  وہ بھی ایک لمبی داستان ہے۔  کبھی موقع ملا تو بتاؤں گا  کہ میری گروتھ ہو رہی تھی اللہ مجھے موقع دے رہا تھا  کہ میں دنیا کے نیچلے سے نیچلے طبقے سے اٹھوں  اور اپنی سوچ کو لے کر آگے چلوں ۔

میرے بیٹے کو انہوں نے ٹکٹ دی تو اس نے  ریکارڈ وکٹری  لی اور لاہور سے 60،70 ہزار ووٹوں کے فرق  سے جیتا  اور یہی سیٹ وہ ہار گئے اگر ان کی کوئی اہمیت ہوتی  تو بیچارے خواجہ سعد رفیق تو نہ ہارتے  اگر میاں نواز شریف کے ووٹ بینک کی کوئی اہمیت ہوتی تو سعد رفیق  الیکشن جیت نہ جاتے اور  سیاست میں ہر شخص کا  اپنا ایک مقام ہوتا ہے۔

کیا آپ کو مسلم لیگ سے الگ ہونے پر افسوس ہوتا ہے؟

یہ باتیں بہت ہو چکی ہیں  میراخیال ہے کہ آج ہم نئی شروعات کریں ، عام عوام پارٹی کی بات کریں ، آج عام لوگوں کی بات کریں ،آج مظلوموں کی  گلیوں میں رہنے والوں کی ، محلوں  میں رہنے والے لوگوں کی  شہروں ، دیہاتوں ، ڈیروں میں رہنے والوں کی  ، کچی آبادیوں اور کھیتوں میں رہنے والے لو گوں کی بات کریں ، مہنگائی کس طرح ختم ہو گی اور لوگوں کے مسائل کے متعلق بات کریں ، کیا ملک میں تعلیم عام شہریوں کو مل رہی ہے ؟  کیا بنیادی صحت لوگوں کو مل رہی ہے ؟  کیا انصاف آپ کی دسترس تک ہے ؟  یہ باتیں آج آپ ہم سے کریں ۔

آپ کون سے نظریات کو لے کر سیاست کرنا چاہتے ہیں؟

مجھے اس چیز پر فخر ہے کہ میرے دادا اور والد نے مزدوری شروع کی  ہم ابھی بھی اپنے آپ کو مزدور ہی کہلواتے ہیں اور میں نظریہ عام عوام لے کر چلنا چاہتا ہوں ۔

بٹ صاحب آپ کی پارٹی کا منشور کیا ہے؟

پہلے میں عام عوام پارٹی کی تھیم لائن دیتا ہوں کہ نبی کریمﷺ کا خطبہ حجۃالودع جو ہے کہ گورے کو کالے پر اور کالے کو گورے پر کوئی فوقیت نہیں  عربی کو عجمی پر اور عجمی کو عربی پر کوئی فوقیت نہیں  اور علامہ اقبال کی وہ نظم

ہومیرا کام غریبوں کی حمایت کرنا
درد مندوں سے ضعیفوں سےمحبت کرنا

تو میں آپ کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ اس پارٹی میں کسی ایم این اے یا ایم پی اے کو جو پہلے تھا یا اب بھی ہے اس کو ٹکٹ نہیں ملے گا۔

آپ نے کہا کہ آپ خلفہ راشدین کا نظام حکومت کے لر چلیں گے وہ کیسے؟

سلسلہ جاری ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جناب سہیل ضیا بٹ کا جواب جاننے کے لیے انٹرویو کے بقیہ حصہ کا انتظار کیجیے۔

1 تبصرہ

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here