کیا آپ برین ہیمرج کی ان خاموش علامات کے بارے میں جانتے ہیں؟

Do you know about these silent signs of Brian Hamburg
Do you know about these silent signs of Brian Hamburg

:لاھور

دماغی شریان پھٹ جانا یا برین ہیمرج ایسا عارضہ ہے جس میں موت کا امکان بہت زیادہ ہوتا ہے۔

اس کی کئی اقسام ہوتی ہیں انٹراکرینیکل ہیمرج، جس میں سر کے اندر خون بہنے لگتا ہے جبکہ دوسری سیریبارال ہیمرج، جس میں دماغ کے اندر یا ارگرد خون بہنے لگتا ہے یا سباراچنائیڈ ہیمرج جس میں دماغ اور دماغ کو کور کرنے والے ٹشوز کے درمیان خلاء پیدا ہوجاتا ہے۔

وجوہات

دماغی شریان پھٹنے کی مختلف وجوہات ہوسکتی ہیں، جیسے سر کی انجری، خون پتلا کرنے والی ادویات، منشیات اور تمباکو نوشی بھی اس کا باعث بن سکتی ہیں۔

برین ہیمرج جان لیوا ہوسکتا ہے کیونکہ اس کے دوران دماغی شریان پھٹ جاتی ہے جس سے دماغ کو نقصان پہنچتا ہے اور بچنے کا انحصار اس بات پر ہوتا ہے کہ کھوپڑی کے اندر سوجن اور خون بہنے کو کتنی جلد کنٹرول کیا جاتا ہے، یعنی کچھ لوگوں پر تو اس کے اثرات مستقل ہوسکتے ہیں جبکہ کچھ مکمل طور پر صحت یاب ہوسکتے ہیں۔

دماغ میں بہنے والے اس خون کے نتیجے میں معمول کا دوران خون متاثر ہوتا ہے جو فالج کا باعث بن سکتا ہے اور ایسا اس وقت ہوتا ہے جب دماغ آکسیجن کی کمی کا شکار ہوجائے، عام طور پر فالج کے بیس سے تیس فیصد کیسز دماغی شریان پھٹنے کے ہی ہوتے ہیں جو کھوپڑی کے اندر دباﺅ جان لیوا حد تک بڑھ جاتا ہے جس سے خون بہنے کا عمل زیادہ تیز ہوجاتا ہے۔

علامات

اچانک، انتہائی شدید سردرد

اچانک چہرے، ہاتھ یا ٹانگ کا سن ہوجانا، سوئیاں چبھنے کا احساس، اعضاء خصوصاً جسم کے ایک جانب کے حصے کا مفلوج ہوجانا۔

کچھ نگلنے میں مشکل یا بینائی اچانک دھندلی ہوجانا۔

جسمانی توازن بگڑ جانا۔

بات کرنے یا سمجھنے، پڑھنے یا لکھنے میں مشکلات کا سامنا۔

شعور یا ذہنی چوکنے پن کی سطح میں تبدیلی، غنودگی، سستی، غفلت یا کوما وغیرہ۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here