آئی فون بچوں کو اپنا عادی تو نہیں بنا رہے؟ ایپل پر تحقیق پر زور

do not make iPhone your children habit! emphasis on Apple research
do not make iPhone your children habit! emphasis on Apple research

:نیویارک

آئی فون بنانے والی کمپنی ایپل پر زور دیا گیا ہے کہ وہ اس بات کی تحقیق کرے کہ آیا اس کے فونز بچوں کو اپنا عادی تو نہیں بنا رہے اور یہ کہ اسمارٹ فون کا زیادہ استعمال بچوں کی ذہنی صحت کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

بلومبرگ نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق ایپل کے 2 اسٹیک ہولڈرز ‘جانا پارٹنرز ایل ایل سی’ اور ‘کیلیفورنیا اسٹیٹ ٹیچرز ریٹائرمنٹ سسٹم’ نے 6 جنوری کو ایپل کو لکھے گئے ایک خط میں کہا کہ ‘اس بات کے شواہد ملے ہیں کہ بچوں میں آئی فون کے استعمال کے منفی اثرات سامنے آرہے ہیں’۔

خط میں خبردار کیا گیا کہ بچوں کی جانب سے اسمارٹ فونز کا زیادہ استعمال سماجی طور پر غیر معمولی ہے اور کسی نہ کسی نکتے پر یہ ایپل پر بھی اثرانداز ہوسکتا ہے۔

مذکورہ اسٹیک ہولڈرز، جن کے ایپل میں 2 ارب ڈالرز کے شیئرز ہیں، نے کمپنی پر زور دیا کہ وہ والدین کے لیے ایسے فیچرز متعارف کروائے، جن کے ذریعے وہ بچوں کے موبائل فون کے استعمال کو محدود کرسکیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس مسئلے پر توجہ دینے سے کمپنی کی طویل المدت قدر و قیمت میں اضافہ ہوگا۔

بلومبرگ کے مطابق جب اس حوالے سے ایپل کے ترجمان سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔

واضح رہے کہ ایپل کی جانب سے پہلے ہی آئی فونز میں والدین کے لیے کچھ فیچرز موجود ہیں جن کی مدد سے وہ اپنے بچوں کی کچھ ایپس اور مواد تک رسائی پر کنٹرول رکھ سکتے ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here