مرنا منہگا، جینا منہگا اور خون سستا ہے، یہ کیسی تبدیلی ہے؟ بلاول

Die expensive, and the price is expensive to live, what kind of change? Bilawal  
Die expensive, and the price is expensive to live, what kind of change? Bilawal  

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ مرنا منہگا، جینا منہگا اور خون سستا ہے، یہ کیسی تبدیلی ہے؟

چارسدہ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے بلاول نے کہا کہ منہگائی کے سونامی میں عوام کو ڈبودیا ہے، ٹیکسز کے سیلاب میں عوام کو بہادیا ہے، قوم سے جھوٹ پر جھوٹ بولا جارہا ہے، ہر طبقے کا معاشی قتل ہورہا ہے، یہ کیسی تبدیلی ہے؟

انہوں نے کہا کہ ہم 1973 کے آئین پر آنچ نہیں آنے دیں گے، سلیکٹڈ یہ سب کچھ ختم کرنا چاہتا ہے، صدارتی نظام لانا چاہتا ہے ،ون یونٹ نظام لانا چاہتا ہے۔

بلاول نے الزام عائد کیا کہ ملک بھر میں بندوق کے زور پر ہمارے پولنگ ایجنٹوں کو باہر کر دیا گیا، پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار فوج کو پولنگ اسٹیشن کے اندر اور باہر کھڑا کر دیا، مشرف اور ضیاء حکومت میں بھی فوج کو پولنگ اسٹیشن کے اندر نہیں کھڑا کیا گیا، عمران نیازی شفاف الیکشن سے ڈرتا ہے، الیکشن کمیشن جاگو، آپ کتنے الیکشن عمران کو جتواؤ گے؟

انہوں نے مزید کہا کہ یہ پنشن میں اضافہ نہ کر کے بزرگوں کا معاشی قتل کررہے ہیں، چھوٹے تاجروں کا معاشی قتل کررہے ہیں، یہ تبدیلی یہ نیا پاکستان عوام کیلئے عذاب بنا ہوا ہے، پیپلز پارٹی نے ہمیشہ غریب آدمی کیلئے جدوجہد کی ہے، جب تک جمہوری حقوق محفوظ نہیں ہوں گے معاشی حقوق محفوظ نہیں ہوں گے۔

بلاول نے کہا کہ آئین پر آنچ نہیں آنے دیں گے، جمہوری اور معاشی حقوق کا دفاع کریں گے، ملک بھر میں ہمارے پولنگ ایجنٹ کو باہر رکھا گیا، میرے حلقہ کا آج بھی فارم 45 لاپتہ ہے، 2013 اور 2018 میں دہشت گردی عروج پرتھی پھر بھی فوج کو پولنگ اسٹیشن پر کھڑا نہیں کیا، یہ ہمارے ادارے ہیں، انہیں متنازع نہ بنایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن جاگو، یہ ہمارے پاس الیکشن کمیشن ہے یا سلیکشن کمیشن؟ ، سیکشن 144 پر اپوزیشن کے نمائندوں کو ہراساں کیا جاتا ہے، الیکشن کمیشن اپنا آزاد کردار ادا کرو، یہ الیکشن ثابت کردے گا کہ ہمارا ہاں الیکشن کمیشن ہے یا سلیکشن کمیشن ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ یہ کس قسم کی آزادی اور جمہوریت ہے کہ ہمارا میڈیا سنسرڈ ہے، سابق صدر کا انٹرویو نہیں چل سکتا، یہ کس قسم کی آزادی اور جمہوریت ہے۔

ان کا دہرا نظام ہے، جھونپڑی حرام بنی گالہ حلال ہے، بلاول

بلاول بھٹو نے کہا کہ ‘ان کا دہرا نظام ہے، جھونپڑی حرام ہے، بنی گالا حلال ہے، نواز شریف کی آف شور کمپنی حرام ہے، ، ایم کیو ایم کی فارن فنڈنگ حرام ہے لیکن پی ٹی آئی کی فارن فنڈنگ حلال ہے، رانا ثناء اللہ کی منشیات حرام ہے، وزیراعظم کی منشیات حلال ہے۔

انہوں نے کہا کہ دھاندلی زدہ حکومت نے دھاندلی کر کے بجٹ پاس کرایا ہے، قبائلی علاقے کے نمائندوں کو اجلاس میں آنے نہیں دیا گیا، یہ عوام دشمن بجٹ ہے، عوام دشمن بجٹ سے خون چوس رہے ہیں، سبزی مہنگی کردی، ڈیزل مہنگا کردیا، چینی مہنگی کردی، مہنگائی کی سونامی میں عوام کو ڈبو دیا ہے، یہ عوام کو بے روزگاری کی دلدل میں دکھیل رہے ہیں، حکومت نے ہر چیز پر ٹیکس لگادیا ہے، یہ پاکستان کا نہیں پی ٹی آئی ایم ایف کا بجٹ ہے۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here