چیف جسٹس کا صحافی ذیشان بٹ کے قتل کا نوٹس، رپورٹ طلب

CJP takes Suo moto notice on Journalist Zeeshad Butt murder
CJP takes Suo moto notice on Journalist Zeeshad Butt murder

:اسلام آباد

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثارنے سیالکوٹ کی تحصیل سمبڑیال میں صحافی ذیشان بٹ کے قتل کا نوٹس لے لیا اور آئی جی پنجاب کو 24 گھنٹے میں واقعے کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے صحافی ذیشان بٹ کے قتل کا نوٹس سپریم کورٹ رپورٹرز کی جانب سے دی گئی درخواست پر لیا۔ عدالت نے آئی جی پنجاب کو نوٹس جاری کر کے صحافی کے قتل کے واقعہ پر 24 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 27 مارچ کو ذیشان بٹ کی اس وقت جان لے گئی جب وہ دکانداروں پر عائد کیے گئے ٹیکس کی معلومات لینے یونین کونسل بیگوالا کے دفتر پہنچا۔ وہاں چیئرمین یونین کونسل عمران چیمہ سے اسکی تلخ کلامی ہوئی اور عمران چیمہ نے صحافی کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں۔ صحافی ذیشان بٹ نے ان دھمکیوں کے حوالے سے 15 پر فون کر کے پولیس کو آگاہ کیا،لیکن اس کے باوجود وہ قتل کر دیئے گئے۔

والدین اپنے جوان بیٹے کی موت پر غم سے نڈھال ہیں تاہم ذیشان کے اہل خانہ نے ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

دوسری جانب سیالکوٹ میں صحافی ذیشان بٹ کا قاتل شواہد سامنے آنے کے باوجود ایک ہفتے بعد بھی گرفتار نہ ہوسکا تاہم ڈی پی او نے اسپیشل انویسٹی گیشن ٹیم تشکیل دے دی جبکہ صحافی تنظیمیں آج مختلف شہروں میں احتجاج کریں گی۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here