چیف جسٹس کا راولپنڈی کا زچہ و بچہ اسپتال 18 ماہ میں مکمل کرنے کی ہدایت

CJP orders completion of Rawalpindi's Mother and Child Hospital in 18 months
CJP orders completion of Rawalpindi's Mother and Child Hospital in 18 months

:راولپنڈی

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے زچہ و بچہ اسپتال راولپنڈی کی تعمیر 18 ماہ میں مکمل کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے سماعت کے بعد زیرتعمیر عمارت کا دورہ بھی کیا اور تاخیر پر چیف انجینئر پی ڈبلیو ڈی کی سرزنش کی۔

چیف جسٹس پاکستان کے دورے کے دوران درخواست گزار شیخ رشید بھی ان کے ہمراہ تھے، اس موقع پر جسٹس ثاقب نثار نے نامکمل اسپتال کا جائزہ لیا اور کہا کہ اسپتال کا سارا اسٹرکچر برباد ہوگیا ہے۔

چیف جسٹس نے حکم دیا کہ 18 ماہ میں اسپتال ہر صورت فعال ہونا چاہیے، قانونی طور پر درکار ہر قسم کی مدد کریں گے اور 15 دن میں تفصیلی رپورٹ دیں کہ اسپتال کی چابی کب حوالے کریں گے۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اسپتال کی تعمیر فوری طور پر شروع کریں، کسی کو ایک دن کی بھی چھٹی نہیں ملے گی اور جو بھی فنڈز درکار ہیں سب ملیں گے جب کہ سپریم کورٹ معاملات کو خود دیکھے گی۔

اس سے قبل راولپنڈی کے زچہ بچہ اسپتال سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران نیسپاک، پی ڈبلیو ڈی اور دیگر اداروں کے حکام عدالت میں پیش ہوئے۔

اس موقع پر اداروں کے حکام نے عدالت کو بتایا کہ منصوبے کی لاگت 5 ارب 33 کروڑ روپے ہے جب کہ پی سی ون پر بھی نظرثانی کی گئی، پہلے 2 آپریشن تھیٹرز بننا تھے لیکن اب 14بنیں گے۔

اسپتال کی تعمیر کے لیے اداروں نے 2 سال کا وقت دینے کی استدعا کی جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ 2 سال نہیں دے سکتا، 18 ماہ میں کام مکمل کریں، پہلے ہی 10 سال کی تاخیر ہوچکی ہے، مزید تاخیر برداشت نہیں کریں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ اسپتال کی تعمیر کی نگرانی سپریم کورٹ کرے گی، میری نگرانی میں فنڈنگ کا مسئلہ نہیں ہوگا، جوڈیشل اکیڈمی میں جگہ ہے 2 کمرے دے دیتا ہوں، ایک ہی چھت تلے بیٹھ کر سب ڈیپارٹمنٹ کام کریں تاخیر نہ کریں۔

جس کے بعد چیف جسٹس نے درخواست گزار شیخ رشید کی درخواست پر زیرتعمیر اسپتال کا بھی دورہ کیا۔

شیخ رشید نے چیف جسٹس سے درخواست کی کہ یہ منصوبہ آپ کے نام سے ہونا چاہیے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اس کی ضرورت نہیں اور نہ ہم یہ چاہتے ہیں۔

شیخ رشید نے چیف جسٹس کو کہا کہ آپ کو اندازہ نہیں کہ اللہ تعالیٰ نے کتنا بڑا کام آپ سے کرایا ہے، آپ کے حکم کے بغیر یہ منصوبہ مکمل نہیں ہوسکتا، یہ قوم کے لیے آپ کا احسان ہے، 70 سال میں خدا آپ کو یہ موقع دے رہا ہے، میری عمر بھی آپ کو لگ جائے۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here