جڑانوالہ میں 7 سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، شہری سراپا احتجاج

7 year girl killed after rape in Jaranwala, civilian protests
7 year girl killed after rape in Jaranwala, civilian protests

:جڑانوالہ

تھانہ سٹی جڑانوالہ کے علاقہ گلشن فاطمہ سے مبشرہ کی لاش کھیتوں سے برآمد ہوئی ہے جس کے بعد شہریوں میں خوف و ہراس کی لہر دوڑ گئی۔ مبشرہ دوسری کلاس کی طالبہ تھی جسے مبینہ زیادتی کے بعد گلہ دبا کر قتل کیا گیا ہے۔  بچی کی ایک ٹانگ کٹی ہوئی اور لاش نیم برہنہ تھی جسے جانوروں نے نوچا ہوا تھا۔ پولیس نے تھانہ سٹی میں نامعلوم ملزمان کے خلاف زیادتی اور قتل کا مقدمہ درج کرلیا۔

گھناؤنے واقعات اور ملزمان کی گرفتاری میں پولیس کی مایوس کن کارکردگی پر شہریوں کا صبر جواب دے گیا۔ جڑانوالہ کے شہری سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاج شروع کردیا۔ مظاہرہ ختم کرنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری پہنچی تو مشتعل شہریوں نے پولیس کی گاڑی روک لی۔

صوبہ پنجاب کے ضلع فیصل آباد کی تحصیل جڑانوالہ میں ایک 7 سالہ بچی سے زیادتی اور قتل کے واقعے کے خلاف شہریوں نے احتجاج کرکے کاروباری مراکز بند کرا دیئے۔

پولیس کے مطابق گذشتہ روز جڑانوالہ میں تھانہ سٹی کی حدود میں کھیتوں سے ایک 7 سالہ بچی کی لاش ملی تھی۔

بچی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق اسے مبینہ طور پر زیادتی کے بعد گلا دبا کر قتل کیا گیا۔

بچی سے زیادتی اور قتل کا مقدمہ تھانہ سٹی جڑانوالہ میں بچی کے والد کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف درج کرلیا گیا۔

 ایف آئی آر کے مطابق ایک نامعلوم شخص نے بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا کر گلا دبا کر قتل کیا۔

بچی کی لاش کو پوسٹمارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کردیا گیا۔

بچی سے زیادتی اور قتل کے واقعے کے خلاف جڑانوالہ میں شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے زبردستی کاروباری علاقے بند کرا دیئے جبکہ روڈ پر ٹائر جلا کر ٹریفک معطل کردیا۔

 مظاہرین نے پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے بچی کے قاتل کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

آئی جی پنجاب نے نوٹس لے لیا

دوسری جانب انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب عارف نواز نے جڑانوالہ میں 7 سالہ بچی کی ہلاکت کانوٹس لیتے ہوئے سی پی او سے 24 گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی۔

آئی جی عارف نواز کا کہنا تھا کہ بچی کے قاتل کو گرفتار کرکے قانون کے تحت کارروائی کی جائے۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here