فخر سے کہہ سکتے ہیں پاکستانی سرزمین پر دہشتگردوں کا کوئی منظم کیمپ موجود نہیں، آرمی چیف

General Qamar Javaid Bajwa
General Qamar Javaid Bajwa

پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ پاکستان نے کالعدم القاعدہ، تحریک طالبان اور جماعت الاحرار کو شکست دے دی، آج فخر سے کہہ سکتے ہیں کہ پاکستانی سرزمین پر دہشت گردوں کا کوئی منظم کیمپ موجود نہیں۔

جرمنی کے شہر میونخ میں سیکیورٹی امور سے متعلق عالمی کانفرنس سے خطاب میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ افغانستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانے موجود ہیں جہاں سے پاکستان میں حملے ہورہے ہیں۔

اپنے خطاب میں آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کی سرزمین ایک دوسرے خلاف استعمال نہیں ہونی چاہیے، افغانستان میں دہشت گردوں کی موجودگی پر پاکستان کو تشویش ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم وہ کاٹ رہے ہیں جو 40 سال پہلے بویا گیا۔

آرمی چیف نے “خلافت کے بعد جہاد ازم” کے موضوع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ خود پر قابو رکھنا بہترین جہاد ہے، تمام مکاتب کے علماء نے مذہب کے نام پر کی جانے والی دہشت گردی کےخلاف فتویٰ دیا ہے، جہاد کا حکم دینے کا اختیار صرف ریاست کو حاصل ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے 2017 میں آپریشن ردالفساد شروع کیا، پاکستان ایشیا میں تیزی سے ترقی کرنے والے ملکوں میں شامل ہے۔

دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے بے پناہ قربانیاں دیں، ایک وقت تھا جب پاکستان سیاحوں کی پسندیدہ جگہ تھی۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ انتہا پسندی کو جہاد نہیں کہنا چاہیے ، افغان سرزمین سے پاکستان پر حملے ہو رہے ہیں، ہم نے 2017 میں آپریشن ردالفساد شروع کیا، ہم نے القاعدہ، جماعت الاحرار اور طالبان کو شکست دی۔

آرمی چیف نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قومی ایکشن پلان پر علم درآمد کررہے ہیں، پاکستان اورافغانستان کی سرزمین ایک دوسرےکیخلاف استعمال نہیں ہونی چاہیے۔

جنرل باجوہ نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کےخلاف جنگ میں صرف فوجی آپریشن نہیں کررہا بلکہ دہشت گردوں کی مالی معاونت کرنےوالوں کے خلاف بھی کارروائی کی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پوری قوم کی مشترکہ کوششوں سے دہشت گردی کاخاتمہ کیاگیا۔

افغانستان کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ سرحد پر بائیو میٹرک نظام نصب کیا گیا، افغانستان میں امن اور استحکام کے لیے تعاون کرنےکو تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کےخاتمے کے لیے تمام ممالک کی مشترکہ کوششوں کی ضرورت ہے۔

جنرل باجوہ نے شرکاء کو آگاہ کیا کہ پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا کام شروع کیا جاچکا ہے جبکہ داعش کے دہشت گردوں کی افغانستان منتقلی کی اطلاعات ہیں۔

قبل ازیں سیکیورٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا کہ عراقی عوام کوروشن مستقبل دیں گے، ملک کو کئی چیلینجزکا سامنا ہے، ہمیں دہشت گردوں کے خلاف متحد ہونا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کو فروغ پانے سے روکنا ہوگاجب تک متحد نہیں ہوں گے امن قائم نہیں ہوسکتا۔

جواب چھوڑ دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here